این اے 249: پی پی اور (ن) لیگ آمنے سامنے

این اے 249کے نتائج سامنے آنے پر مسلم لیگ (ن) اور پاکستان پیپلز پارٹی آمنے سامنے آگئے۔
مسلم لیگ ن نے این اے 249 کا نتیجہ چیلنج کرنے کا اعلان کردیا اور مریم نواز کا کہنا ہےکہ این اے 249 میں (ن) لیگ سے الیکشن چرالیا گیا، یہاں بھی دھند چھا گئی تھی کہ عملہ اتنی تاخیر سے پہنچا؟ ہمیں بے وقوف سمجھ رکھا ہےکیا؟
انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن کو متنازع ترین الیکشن کا نتیجہ روک دینا چاہیے، الیکشن کمیشن نتیجہ نہ بھی روکے تویہ جیت عارضی ہوگی۔ مریم نواز کا کہنا تھا کہ ووٹ کو عزت مل رہی ہے اور مل کر رہے گی، یہ سیٹ جلد واپس مسلم لیگ (ن) کے پاس آئے گی۔ دوسری جانب سندھ کے صوبائی وزیر ناصر شاہ نے کہا کہ (ن) لیگ سارا الزام الیکشن کمیشن پرڈال دیتی ہے، (ن) لیگ جہاں ہارتی ہے وہاں سے ان کا ایجنٹ نتیجہ لیے بغیر غائب ہوتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ مسلم لیگ (ن) نے ڈسکہ میں بھی یہی کیا تھا، (ن) لیگ شاید بھول گئی کہ اس دفعہ ان کا مقابلہ حقیقی جمہوری پارٹی سے تھا۔ علاوہ ازیں ناصر شاہ نے مریم نواز کی ٹوئٹ پر جواب دیتے ہوئے کہا کہ آپ کے پاس الیکشن کمیشن جانے کا حق ہے آپ اسے ضرور استعمال کریں لیکن پہلے ایک دوسرے کو سلیکٹڈ پی ٹی آئی کی مزید رسوائی پر مبارکباد دیتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے اختلافات اپنی جگہ ہیں لیکن ہمارے مقاصد ایک ہیں، آج کی جیت تمام اپوزیشن کی جیت ہے، آئیں اس کا جشن منائیں۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button