آکسفورڈ یونیورسٹی سے ملکہ الزبتھ کی تصویر ختم کرنے کا فیصلہ

آکسفورڈیونیورسٹی کے طلبہ کے مطالبے پر ادارے سے ملکہ الزبتھ کی تصویرہٹانے کا فیصلہ کرلیا گیا۔
میگڈیلن کالج کے کامن روم میں نصب پورٹریٹ ہٹانے کی قرارداد امریکی طالب علم میتھیو نے پیش کی تھی جس کے حق میں 10 طلبہ نے ووٹ دیے جب کہ 2 طلبہ نے قرارداد کی مخالفت کی اور 5 غیر حاضر رہے۔دوسری جانب ملکہ الزبتھ کی تصویرہٹانے کے فیصلے پر برطانیہ کے وزیرتعلیم نے شدیدردعمل کا اظہار کیا ہے۔
ان کا کہنا تھا کہ ملکہ نہ صرف ریاست کی سربراہ ہیں بلکہ برطانیہ میں جوسب سے بہترین ہے اس کی علامت بھی ہیں، ملکہ نے برداشت،جامعیت اوراحترام سے متعلق برطانوی اقداردنیا بھر میں عام کی ہیں۔ادھر کالج کی صدربیرسٹرروزکی جانب سے طالبعلموں کا دفاع کرتے ہوئے کہا گیاہےکہ طلبہ نے ہی ملکہ کو نوآبادیاتی تاریخ کی علامت ٹھہراتے ہوئے 2013 میں
پورٹریٹ نصب کی تھی، اب طلبہ ہی نے اسے ہٹانےکافیصلہ کیاہے۔
یہ بھی پڑھیں: برطانوی ملکہ الزبتھ کے شوہر پرنس فلپ انتقال کر گئے
خیال رہے کہ ملکہ برطانیہ الزبتھ دوم کے شوہر، برطانیہ کی تاریخ میں طویل ترین عرصے تک رائل کونسورٹ کے عہدے پر رہنے والے شہزادہ فلپ 99 برس کی عمر میں انتقال کرگئے۔

Close