ایران نے بحری جہاز پر حملے کے اسرائیلی الزامات مسترد کردیے

ایران کا کہنا ہے کہ وہ عمان کے ساحل پر اسرائیلی پیٹرولیم مصنوعات کے ٹینکرپر حملے میں ملوث نہیں ہے، واقعہ گزشتہ ہفتے پیش آیا تھا جس میں دو افراد ہلاک ہوئے تھے۔اسرائیل نے مذکورہ حملے کا الزام ایران پر عائد کیا تھا۔برطانوی خبررساں ادارے رائٹرز کی رپورٹ کے مطابق ایرانی ترجمان وزارت خارجہ سعید خطیب زادہ نے آن لائن ہفتہ وار کانفرنس میں بات کرتے ہوئے کہا کہ صیہونی ریاست (اسرائیل) نے عدم تحفظ،دہشت گردی اور تشدد کو جنم دیا ہے، تہران مذکورہ واقعے میں ایران کےملوث ہونے کے الزام کی مذمت کرتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس طرح کے الزامات بے بنیاد ہیں جن کا مطلب یہ ہے کہ اسرائیل حقائق سے توجہ ہٹانا چاہتا ہے۔خیال رہے کہ جمعرات کو اسرائیلی بحری کمپنی زوڈیک میری ٹائم کے زیر انتظام جاپانی بحری جہاز پر حملے کے نتیجے میں ایک برطانوی اور رومانیہ کا شہری ہلاک ہوگیا تھا۔اسرائیلی وزیر خارجہ نے کہا کہ یہ واقعہ سخت رد عمل کا مستحق ہے۔ٹینکر میں کیا ہوا تھا اس سے متعلق مختلف وضاحتیں سامنے آئی ہیں، زوڈیک میری ٹائم نے کہا کہ واقعہ ‘مشتبہ قزاقی’ ہے۔

عمان میری ٹائم سیکیورٹی سینٹر کے ذرائع نے کہا ہے کہ حادثہ عمانی بحری سرحدوں کے باہر پیش آیا۔واقعے سے متعلق خفیہ اطلاعات سے واقف مریکی اور یورپی ذرائع کے مطابق اس واقعے کا شک ایران پر ہے۔امریکی وزارت داخلہ کے ایک عہدیدار کا کا کہنا تھا کہ بظاہر لگتا ہے کہ یہ حملہ ڈرون سے کیا گیا تھا لیکن حکومت حتمی شواہد تلاش کر رہی ہے۔

Close