سیوریج کے پانی سے سبزیوں کی کاشت، شہریوں میں بیماریاں پھیلنے لگیں

ملتان میں وسیع پیمانے پر سیوریج کے پانی سے سبزیوں کی کاشت کے باعث شہریوں میں مختلف قسم کی بیماریاں جنم لے رہی ہیں تاہم ضلعی انتظامیہ کو اسکی ذرا بھی پروا نہیں۔

ملتان میں سورج میانی اور شجاع آباد روڈ سے ملحقہ علاقوں میں سینکڑوں ایکڑ رقبے پر سیوریج کے پانی سے سبزیوں کی کاشت کا سلسلہ گزشتہ کئی سالوں سے جاری ہے جہاں سے روزانہ کئی سو من آلو، ٹماٹر، پیاز، گوبھی، بینگن، پالک اور ارویاں ملتان سمیت پورے جنوبی پنجاب کی منڈیوں میں سپلائی کی جاتی ہیں تاہم شکایات کے باوجود انتظامیہ روک تھام میں ناکام ہے۔

صوبائی وزیر زراعت کا مئو قف ہے کہ سیوریج کے پانی سے غیر معیاری سبزیوں کی کاشت کخلاف کارروائیاں کی جا رہی ہیں تاہم جلد ہی جراثیم زدہ پانی سے سیراب کی گئی تما م فصلوں کو تلف کر دیا جائے گا۔

محکمہ فوڈ کی کارروائیاں بھی صرف فوٹو سیشن اور زبانی جمع خرچ تک محدود ہیں جس کے باعث زہریلے پانی سے تیار کی گئی سبزیاں کھانے سے شہریوں کی بڑی تعداد مختلف قسم کی بیماریوں کا شکار ہو رہی ہے۔

Close