ابرارالحق کی جانب سے بے بی شارک گانے پر تنقید مسترد





گلوکار ابرارالحق کی جانب سے بچوں کو چپ کروانے کے لیے آج کی ماوں کی جانب سے معروف کورین گانا بے بے شارک سنانے پر کی گئی تنقید کئی شوبز شخصیات کو پسند نہیں آئی اور وہ ابرار پر تنقید کر رہی ہیں۔
یاد رہے کہ ابرار الحق نے حال ہی میں ایک تقریب میں کہا تھا کہ جب وہ بچے تھے تو تب کی مائیں اپنے بچوں کو گود میں سلاتے ہوئے اسلامی کلمات سناتی تھیں لیکن آج کل کی مائیں اہنے بچوں کو موبائل فون دے کر اس پر ’بے بی شارک‘ جیسا گانا لگا دیتی ہیں، اس موقع پر انہوں نے منفرد انداز میں بچوں اور بڑوں کے مقبول گانے ’بے بی شارک‘ کو گاکر بھی دکھایا۔
یاد رہے کہ دنیا بھر میں مقبول بچوں کے اس گانے کو جون 2016 میں یوٹیوب پر پہلی مرتبہ اپلوڈ کیا گیا تھا جو امریکی کیمپ فائر سانگ کا ری میک ہے اور جنوبی کوریا کے دارالحکومت سیول میں واقع پروڈکشن کمپنی پنک فونگ نے جاری کیا تھا۔ یوٹیوب پر کامیابی کی وجہ سے یہ گانا عالمی میوزک کی درجہ بندی میں بھی جگہ بنانے میں کامیاب ہوا اور جنوری 2019 میں بے بی شارک بل بورڈ ہاٹ 100 میں 32ویں نمبر پر پہنچ گیا تھا۔
بے بی شارک اور ماوں والے تبصرے پر اداکارہ اور ماڈل نادیہ حسین نے ابرار الحق کے کمنٹس پر سخت تنقید کرتے ہوئے انہیں گلوکار ہونے کے باوجود بچوں کے گانے پر تنقید کرنے پر طعنے بھی دیے۔ نادیہ حسین کا کہنا تھا کہ ایک ایسا شخص جو خود گانے گاتا ہو اور موسیقی کے ساتھ ہی بڑا ہوا ہو، اسے اس طرح کی باتیں نہیں کرنی چاہیے۔ نادیہ نے لکھا ابرار الحق کو آج کل کی ماؤں کی تربیت پر بات نہیں کرنی چاہیے تھی۔ انہیں یہ ذہن میں رکھنا چاہیے تھا کہ کیا ان کے بلو تیری ٹور ویکھ کے اور اساں تے جاناں بلو دے گھر جیسے گانے سن کر نئی نسل کی کیسی پرورش ہو رہی ہے؟ نادیہ کی جانب سے گلوکار پر سخت تنقید کرنے پر کئی شوبز شخصیات نے ان کی حمایت کی اور اداکار یاسر حسین نے بھی ماڈل و میک اپ آرٹسٹ کا ساتھ دیا۔
یاسر حسین کے مطابق نادیہ حسین نے گلوکار پر درست انداز میں تنقید کی۔جہاں نادیہ حسین اور یاسر حسین جیسے افراد ابرارالحق کی بات پر ایک ہی پیج پر دکھائی دیے، وہیں دوسری شوبز شخصیات نے گلوکار کا ساتھ دیا۔ اداکارہ زرنیش خان نے ابرارالحق کے بیان کو ان کی ذاتی رائے قرار دیا اور کہا کہ دوسروں کی بات سننے اور انہیں اپنی بات کہنے کا موقع دیا جانا چاہیے، دوسری صورت میں ہم سب کو گونگے ہونے کی مشق کرنی پڑے گی۔
اداکارہ نے لکھا کہ گلوکار کی بات کو نظر انداز کیا جائے، نہ کہ اس کی پوری زندگی کا دوبارہ جائزہ لیا جائے۔ گلوکار امانت علی نے بھی ابرار الحق کا ساتھ دیا اور کہا کہ انہوں نے کوئی غلط بات نہیں کی اور نہ ہی انہوں نے کسی خاتون یا ماؤں پر تنقید کی ہے، بس انہوں نے اپنی رائے کا اظہار کیا ہے۔ امانت علی نے واضح کیا کہ ابرارالحق نے ایک سال کی عمر میں یا والدہ کی گود میں بیٹھ کر گانے نہیں بنائے تھے، وہ تب موسیقار اور گلوکار بنے جب وہ بڑے ہوچکےتھے۔ ان کی طرح اداکارہ اشنا شاہ نے بھی ابرار الحق کا ساتھ دیا اور ان کی تعریف میں مختصر پوسٹ کرتے ہوئے انہیں لیجنڈ قرار دیا اور ساتھ ہی ان سے محبت کا اظہار بھی کیا۔
شوبز شخصیات کے علاوہ بھی عام لوگ ابرارالحق کی بات پر منقسم دکھائی دیے، جہاں کئی لوگوں نے ان کی بات سے اتفاق کیا تو وہیں کئی افراد نے کہا کہ ایسا نہیں ہے کہ ہر ماں اپنے بچے کو موبائل فون دے کر اس پر گانے چلا دیتی ہیں۔

Back to top button