کالے قانون کیخلاف لڑ رہے ہیں ، انشا اللہ سرخرو ہونگے

پاکستان فیڈرل یونین آف جرنلسٹس (پی ایف یو جے) کے صدر شہزادہ ذوالفقار نے حکومت کی جانب سے مجوزہ میڈیا ڈیویلپمنٹ اتھارٹی بل کے نام پر کالے قانون کو مکمل طور پر مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم سماج کے لیے لڑ رہے ہیں اور انشاء اللہ اس میں ہم سرخرو ہونگے، سرکاری فنڈ والے لوگوں کا کیمپ بھی کل لوگوں نے دیکھ لیا کہ ادھر کتنے لوگ تھے۔

کل ملک بھر کے صحافیوں نے بتا دیا کہ ان کی قوت کیا ہے، دھرنے کی کامیابی سے حوصلہ بڑھا ہے، حکومت کی طرف سے یہ تاثر دینا کہ بل صحافی ورکروں کے حق میں ہے اور مالکان اسے نہیں لانا چاہتے ختم کریں گے،بل کو اردو میں ترجمہ کر لیا ہے اس کو جلد شیئر کر رہے ہیں،ملک بھر کی مزدور تنظیموں اور سول سوسائٹی کو بتائیں گے کہ بل میں حکومت کیا کرنے جا رہی ہے، پی ایف یو جے کا 3 روزہ اجلاس کل سے لاہور میں ہو رہا ہے۔

اجلاس میں تحریک کے حوالے سے اہم فیصلے کریں گے، پارلیمنٹ ہاؤس کے سامنے میڈیا ڈیویلپمنٹ اتھارٹی بل کیخلاف کامیاب دھرنے اور آئندہ کے لائحہ عمل کے حوالے سے نیشنل پریس کلب اسلام آباد میں سیکرٹری جنرل ناصر زیدی، دھرنا ایکشن کمیٹی کے چیئرمین افضل بٹ، صدر آر آئی یو جے عامر سجاد سید اور جنرل سیکرٹری طارق علی ورک کے ہمراہ مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے صدر پی ایف یو جے شہزادہ ذوالفقار کا کہنا تھا کہ گزشتہ روز کا کامیاب دھرنا پی ایف یو جے اور آر آئی یو جے کی قیادت اور کارکنوں کی بے لوث محنت اور لگن کا نتیجہ ہے۔

سرکاری فنڈ والے لوگوں کا کیمپ بھی کل لوگوں نے دیکھ لیا کہ ادھر کتنے لوگ تھے، کل ملک بھر کے صحافیوں نے بتا دیا کہ ان کی قوت کیا ہے، فواد چودھری سمجھتے ہیں کہ پی ٹی وی ، اے پی پی اور تنخواہ دار یو ٹیوبرز سے سارے ملک کے میڈیا کو ہانک لیں گے، کل کا دھرنا مثالی تھا اور پی ایم ڈی اے کو مکمل طور پر مسترد کرتے ہیں،انہوں نے مزید کہا کہ بل کو اردو میں ترجمہ کر لیا ہے اس کو جلد شیئر کر رہے ہیں،ملک بھر کی مزدور تنظیموں اور سول سوسائٹی کو بتائیں گے کہ بل میں حکومت کیا کرنے جا رہی ہے اور اس حوالے سے بل کو اردو میں ترجمہ کر لیا ہے اس کو جلد شیئر کر رہے ہیں، ملک بھر کی مزدور تنظیموں اور سول سوسائٹی کو بتائیں گے کہ بل میں حکومت کیا کرنے جا رہی ہے۔

یہ حکومتی تاثر دینا کہ بل صحافی ورکروں کے حق میں ہے اور مالکان اسے نہیں لانا چاہتے ختم کریں گے، ہم پوری قوت سے بل کے خلاف جدوجہد کریں گے، تحریک میں اب اور سخت مرحلے بھی آئیں گے لہذاٰ صحافی گرفتاریوں اور نوکریوں سے برخاستگیوں کے لیے بھی تیار رہیں،انہوں نے کہا کہ ہم نہیں سمجھتے کہ مالکان کی تنظیموں میں سے کوئی حکومت سے سمجھوتہ کرے گا، یہ حکومت کی خواہش ہو سکتی ہے لیکن آج تک سب لوگ ایک موقف پر کھڑے ہیں، اگر کوئی سمجھوتہ کرے بھی تو ہم اس کے پابند نہہں۔

ہم اس موقع پر کوئی ایسی بات نہیں کرنا چاہتے جس سے اتحاد میں دراڑ آئے، ہم تو وہ لوگ ہیں جو چندہ ملا کر کام کرنے والے لوگ ہیں، پی ایم ڈی اے صرف صحافیوں کا نہیں قوم، ملک اور جمہوریت کا مسئلہ ہے، ہم سماج کے لیے لڑ رہے ہیں انشاء اللہ ہمیں کامیابی ہو گی، اس موقع پرسیکریٹری جنرل پی ایف یو جے ناصر زیدی کا کہنا تھا کہ پی ایم ڈی اے کے مارشل لائی اور کالے قانون کو تسلیم نہیں کرتے، پی ایم ڈی اے کو مکمل طور پر مسترد کرتے ہیں اور اسے کسی صورت قبول نہیں کرینگے، پریس کی آزادی اور اس پر سنسر شپ کیخلاف میدان عمل میں رہیں گے اور اس بل پر کوئی مزاکرات نہیں کئے جائینگے۔

اس سے قبل جتنے بھی قوانین ڈکٹیٹروں نے بنائے پی ایف یو جے ہمیشہ فرنٹ پر رہی ہے، کل کا دھرنا مثالی تھا، اس سے قبل سیاسی جماعتیں اور دیگر سٹیک ہولڈرز ہمارے ساتھ نہیں ہوتے تھے، پہلی بار تمام اپوزیشن جماعتوں اور سٹیک ہولڈرز نے پی ایف یو جے کا ساتھ دیا ہے،آج پوری قوم اس بات پر متحد ہو چکی، ہم اس اتحاد کو برقرار رکھیں گے، دھرنا ایکشن کمیٹی کے چیئرمین افضل بٹ نے کہا کہ فواد چودھری نے تمام پاکستان کے صحافیوں کو مشتعل کر کے ایک کر دیا ہے۔

کل شاہراہ دستور سے گزرنے والی بین الاقوامی برادری کو پاکستان میں میڈیا کی صورتحال کا علم ہو گیا، فواد چودھری کا شکریہ ادا کرتے ہیں کہ ان کی حماقتوں سے دھرنا مکمل کامیاب رہا، فواد چودھری نے پہلے ہی ایم ڈی اے کے بل کا ملبہ فوج پر ڈالنے کی کوشش کی، کل فواد چودھری نے وزیر اعظم اور سپیکر کے خلاف سازش کی، پہلے جعلی صحافیوں کو کارڈز جاری کیے اور بات نہ بنی تو پریس گیلری کو تالے لگا دیئے گئے، فواد چودھری چاہتے تھے کہ دھرنے کے غیض و غضب کا رخ انکے بجائے وزیر اعظم اور سپیکر کی طرف ہو جائے، وزیر اعظم کو بتانا چاہتے ہیں کہ ف…

Close