ڈالر کی مانیٹرنگ مزید سخت کر دی گئی

اسٹیٹ بینک نے ڈالر کی مانیٹرنگ کو سخت کرتے ہوئے دس کی بجائے پانچ لاکھ ڈالر کی ادائیگی سے قبل مرکزی بنک کو آگاہ کرنے کا حکم دیا ہے ۔

 نوٹیفکیشن کے مطابق  بینک ہر 5 کاروباری دنوں میں ہونے والی متوقع ادائیگیوں کی پیشگی تفصیلات سے روزانہ کی بنیاد پر مرکزی بینک کو آگاہ  کرنا ہوگا ۔

بینکاری ذرائع کے مطابق  اس اقدام کا مقصد ڈالر کی طلب پر مانیٹرنگ سخت کرنا ہے، اس کے علاوہ تجارتی خسارے کو لگام دینے اور معشیت میں طلب کا زور کم کرنے کے لیے مرکزی بینک نے کنزیومر فنانسنگ جیسے گاڑی یا پرسنل لون کی شرائط کو بھی سخت کردیا ہے۔

ایک ہزارسی سی سے زائد پاور کی گاڑیوں کے لیے قرضے کی زیادہ سے زیادہ مدّت سات سال سے کم کر کے 5 سال کردی گئی ہے،گاڑی کے لیے زیادہ سے زیادہ قرض 30 لاکھ روپے تک لیا جا سکتا ہے  ۔ ڈاون پیمنٹ 15 کے بجائے 30 فیصد تک بڑھا دی گئی ہے۔

Back to top button