طالبان سے رہائی پانے والے شہباز تاثیر نے دوسری شادی کر لی





2011 میں اغوا کے بعد پانچ برس تک طالبان کی قید میں رہنے والے سابق گورنر پنجاب سلمان تاثیر کے صاحبزادے شہباز تاثیر نے 2019 میں اپنی پہلی بیوی سے طلاق کے دو برس بعد ایک خوبصورت پاکستانی ماڈل نیہا راجپوت سے دوسری شادی کر لی ہے۔

نیہا نے شہباز تاثیر سے شادی کی تصدیق کرتے ہوئے مایوں کی تقریبات کی ویڈیوز سوشل میڈیا پر شیئر کی ہیں۔ نیہا راجپوت اور شہباز تاثیر کی شادی کے حوالے سے چہ مگوئیاں جاری تھیں۔ نیہا کی شادی کی تقریبات میں شامل ہونے والی اداکاراؤں و ماڈلز نے بھی ان کی مایوں اور مہندی کی تقریبات کی ویڈیوز شیئر کیں، جن سے معلوم ہوتا ہے کہ مایوں کی تقریبات 23 اور 24 ستمبر کی درمیانی شب کو ہوئیں۔ ماڈل کی جانب سے شیئر کی گئی ویڈیوز اور تصاویر میں ان کے ہمراہ ماڈل و اداکارہ ابیر رضوی سمیت دیگر ماڈلز کو بھی دیکھا جا سکتا ہے۔

ان ویڈیوز میں شہباز تاثیر کو بھی خوشگوار موڈ میں دیکھا جا سکتا ہے جب کہ تقریبات میں دونوں کے اہل خانہ کے افراد کو بھی رقص کرتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے۔ نیہا راجپوت اور شہباز تاثیر کے درمیان گزشتہ چند ماہ سے تعلقات تھے اور رواں برس مئی میں دونوں کو میڈیا کے سامنے بھی سرعام ملتے دیکھا گیا۔ اسی وقت سے ان کی شادی بارے چہ مگوئیاں جاری تھیں۔ یاد رہے کہ نیہا نے 2016 میں اداکاری کا آغاز کیا، اس سے قبل وہ ماڈلنگ کرتی تھیں، ان کی پرورش یورپی ملک یوکرین میں ہوئی ہے، کیوں کہ ان کی والدہ کا تعلق وہیں سے ہے۔ نیہا راجپوت کے والد کا تعلق لاہور سے ہے اور انہوں نے پاکستان منتقل ہونے کے بعد وہیں سے ماڈلنگ و اداکاری کا آغاز کیا۔

خیال رہے کہ شہباز تاثیر کی یہ دوسری شادی ہے، اس سے قبل انہوں نے فیشن ڈیزائنر ماہین غنی سے 2010 میں شادی کی تھی اور انکا ایک بیٹا بھی ہے۔ شہباز تاثیر کی سابق اہلیہ ماہین غنی نے دسمبر 2019 کے آخر میں ایک ٹوئٹ کے ذریعے اپنی طلاق کی خبریں دی تھی اور گھریلو ناچاقی پر کھل کر بات کی تھی۔ انہوں نے سلسلہ وار ٹوئٹس میں تشدد، ناروا سلوک اور شادی کے آخری سالوں کو بدترین بھی قرار دیا تھا لیکن انہوں نے شوہر کا نام لکھ کر ان پر براہ راست تشدد اور استحصال کا الزام نہیں لگایا تھا۔

یاد رہے کہ شہباز کے والد سابق گورنر پنجاب سلمان تاثیر کو جنوری 2011 میں ان کے ایک پولیس گارڈ نے اسلام آباد میں قتل کر دیا تھا۔ اس قتل کے 7 ماہ بعد انہیں اگست 2011 میں تحریک طالبان پاکستان نے لاہور کے علاقے گلبرگ سے اغوا کر لیا تھا۔ شہباز تاثیر تقریبا 5 سال تک مغویوں پاس افغانستان میں رہے تھے، جس کے بعد مارچ 2016 میں انہیں بازیاب کروایا گیا تھا۔ شہباز تاثیر نے اپنی دوسری شادی سے متعلق سوشل میڈیا پر کوئی تصویر یا ویڈیو شیئر نہیں کی۔ اس سے پہلے انہوں نے اپنی طلاق کے حوالے سے بھی سوشل میڈیا پر کوئی تبصرہ نہیں کیا تھا حالانکہ ان کی اہلیہ نے اپنی طلاق کی خبر بھی ٹوئٹر پر دی تھی۔

شہباز کی پہلی بیوی ماہین غنی نے ٹویٹ میں لکھا تھا کہ اس صدی کو اگر ایک طوفانی صدی کہا جائے تو غلط نہ ہو گا کیونکہ یہ صدی صدموں، اغوا، انتظار، دعاوں، اور معجزوں پر محیط تھی۔ماہین نے لکھا کہ ماں بننے کے بعد اور طلاق نے مجھے بہت زیادہ مضبوط اور طاقتور بنا دیا ہے۔ انہوں نے لکھا کہ پہلی بار فخر سے بتا سکتی ہوں کہ میں کون ہوں اور اپنے حصے کے احترام اور عزت کا مطالبہ کر سکتی ہوں۔ انہوں نے اپنے لیے دعا کرتے ہوئے لکھا تھا کہ آنے والی دہائی مجھ سے ویسی بہادری کا تقاضہ نہ کرے۔ انہوں نے اپنی ٹویٹ کا اختتام اس معنی خیز فقرے پر کیا کہ میں آپ سب کے لیے اپنوں کے ساتھ وفادار رہنے کی دعا کرتی ہوں۔

Back to top button