فیس بک بندش ، مارک زکربرگ کو 6 ارب ڈالر کا نقصان

سماجی رابطے کی سب سے بڑی ویب سائٹ‌ فیس بک کی بندش کی وجہ سے سماجی رابطے کی ویب سائٹ‌ کے بانی مارک زکر برگ کو چھ ارب ڈالر سے زائد کا نقصان اٹھانا پڑ گیا ، پاکستانی روپوں‌ میں‌ اس کی مالیت دس کھرب روپے بنتی ہے۔

فیس بک، واٹس ایپ اور انسٹاگرام کی سروسز 4 اور 5 اکتوبر کی درمیانی شب دنیا بھر میں بند ہوگئی تھی جو 6 گھنٹے بعد بحال ہوئی۔ فیس کے بانی نے تصدیق کی سرور میں خرابی کے باعث سوشل میڈیا سروسز متاثر ہوئیں تاہم اس سے کسی بھی صارف کو ڈیٹا چوری نہیں‌ ہوا۔

تینوں سوشل ایپس اور ویب سائٹس کی سروس بند ہونے کی وجہ سے فیس بک کے بانی مارک زکربرگ کی ذاتی دولت میں نمایاں کمی دیکھی گئی۔معروف جریدے بلوم برگ کے مطابق فیس بک کی سابق خاتون ملازمہ فرانسس ہافن کے انکشافات اور واٹس ایپ، انسٹاگرام اور فیس بک کی سروس بند ہونے سے مارک زکربرگ کی دولت میں 6 ارب امریکی ڈالر یعنی پاکستانی 10 کھرب روپے سے زائد کی کمی آئی ہے۔

دولت میں کمی آنے کی وجہ سے فیس بک کے بانی مارک زکر برگ امیر ترین افراد کی فہرست میں تیسرے سے پانچویں نمبر پر آ گئے ہیں ، مارک زکر برگ حیران کن طور پر مائیکرو سافٹ کے بانی بل گیٹس اور فرانسسی کاروباری شخص برنارڈ ارنالٹ سے بھی زیادہ غریب ہوگئے ہیں۔

فیس بک کی سابق ملازمہ نے حال ہی میں امریکی ٹی وی سی بی ایس کو دیئے گئے انٹرویو میں انکشاف کیا تھا کہ فیس بک کمائی کی خاطر پرتشدد، توہین آمیز مواد سمیت غلط معلومات کی حوصلہ افزائی کرتا ہے۔ مارک زکربرگ کی دولت میں‌ کمی کے ساتھ فیس بک کے شیئرز میں‌ بھی نمایاں‌ کمی آئی ہے ۔

دولت میں 6 ارب ڈالر کی کمی کے بعد مارک زکربرگ ارب پتی افراد کی بلوم برگ کی فہرست میں پانچویں نمبر پر آگئے اور ان کی مجموعی دولت 122 ارب ڈالر ہوگئی۔وہ فیس بک کے بانی ہیں اور واٹس ایپ سمیت انسٹاگرام بھی ان کی کمپنی کی ملکیت ہے، علاوہ ازیں وہ دیگر چند ایپس کے مالک بھی ہیں۔

Back to top button