صوبائی وزیر میاں محمود الرشید کیخلاف اندراج مقدمہ کا حکم

پی ٹی آئی کے رکن پنجاب اسمبلی محمود الرشید قبضہ گروپ کے سرغنہ نکلے. لاہور کی مقامی عدالت نے تحریک انصاف کے رہنما اور صوبائی وزیر پنجاب میاں محمودالرشید کیخلاف زمین پر قبضے پر مقدمے کے اندراج کا حکم دے دیا ہے.
لاہور کی سیشن کورٹ نے پولیس کو حکم دیا ہے کہ وہ درخواست گزار کا بیان ریکارڈ کرے اور اگر پنجاب کے وزیر بلدیات میاں محمودالرشید اور دیگر کا جرم قابل سزا ہے تو ان کے خلاف زمین پر قبضے کا مقدمہ درج کیا جائے۔
ڈان اخبار کی رپورٹ کے مطابق ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج حافظ رضوان عزیز نے یہ حکم علامہ اقبال ٹاؤن کے رہائشی عابد انصر خان کی درخواست پر جاری کیا، انہوں نے سی آر پی سی کے سیکشن 22 ’اے‘ اور 22 ’بی‘ کے تحت شکایت درج کرائی تھی۔درخواست گزار نے وکیل کے ذریعے دائر درخواست میں مؤقف اختیار کیا کہ وہ مصطفیٰ ٹاؤن میں واقع اپنے ایک کنال کے پلاٹ پر تعمیرات کر رہے تھے تب محمود الرشید 8 مسلح افراد کے ہمراہ وہاں پہنچے اور مبینہ طور پر جائیداد پر قبضے کی کوشش کی۔انہوں نے الزام لگایا کہ علاقے کے معززین کی بروقت مداخلت پر ملزمان جائے وقوع سے فرار ہوگئے لیکن انہیں جان سے مارنے کی دھمکیاں دیں۔
درخواست گزار نے مزید بتایا کہ اس زمین سے متعلق ایک اور کیس لاہور ہائی کورٹ میں بھی زیر التوا ہے۔سیشن جج نے اپنے تحریری حکمنامے میں کہا کہ درخواست گزار کی کوشش کے باوجود بھی ایس ایچ او مصطفیٰ ٹاؤن نے سی آر پی سی کے سیکشن 154 کے تحت اپنی ذمہ داری پوری نہیں کی۔جج نے کہا کہ بظاہر درخواست گزار کی جانب سے ملزم پر لگائے گئے الزامات قابل سماعت ہیں۔
انہوں نے ایس ایچ او کو درخواست گزار کا بیان ریکارڈ کرنے اور قابل سزا جرم سرزد ہونے کی صورت میں ایف آئی آر درج کرنے اور قانون کے مطابق کارروائی کرنے کی ہدایت کی۔جج نے ایس ایچ او کو مزید حکم دیا کہ جب وہ درخواست گزار کی جانب سے ملزم پر لگائے الزامات سے مطمئن ہو تو اسے گرفتار کرے۔

Related Articles

Back to top button