شہزادہ چارلس پر اپنے پوتوں کی تضحیک کا الزام کیوں لگا؟


لیڈی ڈیانا کے سابق شوہر شہزادہ چارلس اس وقت سوشل میڈیا پر شدید تنقید کی زد میں ہیں جس کی وجہ یہ خبریں ہیں کہ انہوں اپنے چھوٹے بیٹے شہزادہ ہیری اور انکی اہلیہ میگھن مارکل کے بچوں کی رنگت کو تضحیک کا نشانہ بنایا تھا۔ تاہم خود پر ہونے والی تنقید کے بعد پرنس چارلس نے ان خبروں کی سختی سے تردید کر دی ہے، ملکہ برطانیہ ایلزبتھ دوئم کے بڑے بیٹے شہزادہ چارلس نے واضح کیا ہے کہ انہوں نے کبھی بھی اپنے چھوٹے پوتوں یعنی شہزادہ ہیری اور میگھن مارکل کے بچوں کی رنگت سے متعلق کوئی قابک اعتراض بات نہیں کی ہے۔

شہزادہ چارلس کے ترجمان نے بارباڈوس میں صحافیوں کے پوچھے گئے سوالوں پر واضح کیا کہ ملکہ ایلزبتھ دوئم کے بڑے بیٹے پرنس چارلس نے اپنے پوتوں کی رنگت سے متعلق کوئی اعتراض نہیں کیا اور اور ان الزامات میں کوئی حقیقت نہیں۔
شہزادہ چارلس کے ترجمان کا کہنا تھا کہ ان سے متعلق ایک کتاب میں کیے گئے دعووں کا حقیقت سے کوئی تعلق نہیں، چارلس نے شہزادہ ہیری کے بچوں کی رنگت یا شکل و صورت سے متعلق کبھی کوئی بات نہیں کی۔

خیال رہے کہ یہ وضاحت ایسے وقت میں سامنے آئی ہے جب حال شائع ہونے والی کتاب (Brothers And Wives: Inside The Private Lives of William, Kate, Harry and Meghan) میں یہ کہا گیا کہ شہزادہ چارلس نے اپنے پوتوں کی رنگت سے متعلق تضحیک آمیز باتیں کی تھیں جس کے بعد ان کے بیٹے نے شالیمار اور شاہی سٹیٹس چھوڑ کر برطانیہ سے نکل جانے کا فیصلہ کیا۔ کتاب کے لکھاری کرسٹوفر اینڈرسن نے دعویٰ کیا ہے کہ شہزادہ چارلس نے سوال کیا تھا کہ شہزادہ ہیری اور میگھن مارکل کے بچے کس طرح کے ہوں گے؟ اسی حوالے سے کتاب کے لکھاری کرسٹوفر اینڈرسن نے ایک انٹرویو میں بتایا کہ بطور دادا شہزادہ چارلس نے اپنے پوتوں کی رنگت و خدوخال سے متعلق باتیں کیں مگر وہ باتیں بچوں کی پیدائش سے قبل کی گئیں جب یہ سوال اٹھا کہ بچوں کی رنگت کیسی ہو گی۔ کتاب میں دعویٰ کیا گیا کہ جب شہزادہ ہیری نے میگھن مارکل سے منگنی کی تھی تب شہزادہ چارلس نے اپنی اہلیہ کمیلا سے بات کرتے ہوئے کہا تھا کہ ان دونوں کے بچے کس رنگت کے ہوں گے؟ اس پر ان کی اہلیہ نے مسکراتے ہوئے جواب دیا تھا کہ ان کے بچے بہت ہی پیارے ہوں گے۔

اس کتاب کو جلد ہی فروخت کے لیے پیش کیا جائے گا تاہم اس میں یہ واضح نہیں ہے کہ وہ شخص کون تھا جس پر میگھن مارکل نے ایک انٹرویو میں الزام لگایا تھا کہ شاہی خاندان کے ایک سینئر فرد نے ان کے بچوں کی رنگت سے متعلق باتیں کیں۔ میگھن مارکل نے شوہر شہزادہ ہیری کے ہمراہ ٹی وی سٹار اوپرا ونفرے کو مارچ 2021 میں دیئے گئے انٹرویو میں کہا تھا کہ شاہی محل نے 2019 میں ان کے ہاں پیدا ہونے والے بیٹے ’آرچی‘ کو شہزادے کا لقب دینے سے انکار کیا جبکہ ان کے ہاں بچے کی پیدائش سے قبل ہی ان کی رنگت سے متعلق چہ مگوئیاں شروع کی گئی تھیں۔ انٹرویو میں میگھن مارکل نے بتایا تھا کہ شاہی محل میں نسلی امتیاز کا نشانہ بننے، بیٹے کو شہزادہ نہ بنائے جانے اور برطانوی میڈیا میں من گھڑت خبروں کی اشاعت کے بعد مدد مانگے جانے پر شاہی محل کے انکار کے باعث وہ ذہنی مسائل کا شکار ہوئیں اور تب انہوں نے خودکشی کرنے کا بھی سوچا تھا۔
یہ بھی پڑھیں: ن لیگ ، پیپلز پارٹی امیدواروں کی نا اہلی درخواست مسترد
بعد ازاں میگھن مارکل کے انٹرویو پر شاہی محل کی جانب سے جاری بیان میں ان کی باتوں پر گہری تشویش کا اظہار کیا گیا تھا اور کہا گیا تھا کہ شاہی محل جوڑے کو پہنچنے والی تکالیف کے درد کا احساس رکھتا ہے۔ لیکن اب شہزادہ چارلس کے ترجمان نے واضح کیا ہے کہ شہزادے نے کبھی بھی اپنے پوتوں کی رنگت سے متعلق باتیں نہیں کیں۔شہزادہ ہیری اور میگھن مارکل نے مئی 2018 میں شادی کی تھی، ان کے ہاں پہلے بیٹے ’آرچی‘ کی پیدائش مئی 2019 میں جبکہ بیٹی للی بیٹ ‘للی’ ڈیانا ماؤنٹ بیٹن ونڈسر کی پیدائش جون 2021 میں ہوئی تھی۔

Related Articles

Back to top button