سری لنکن مینجر کو لبیک والوں نے چھت سے کیسے پکڑا؟

سانحہ سیالکوٹ میں تحریک لبیک والوں کے ہاتھوں مارے جانے والے سری لنکن منیجر نے اپنی جان بچانے کے لیے فیکٹری کی چھت پر پناہ لی تھی لیکن ہجوم وہاں بھی پہنچ گیا اور اسے مار ڈالا۔ سانحہ سیالکوٹ کے واقعے میں جہاں ظالموں کا ایک ہجوم تھا، وہیں اس ہجوم کے بیچ میں انسانیت کا ایک نام لیوا بھی تھا جس نے سری لنکن منیجر کی جان بچانے کی پوری کوشش کی۔ فیکٹری ملازمین نے جب منیجر پر حملہ کیا تو فیکٹری کا پروڈکشن منیجر ملک عدنان اسے لیکر چھت پر چلا گیا اور دروازہ بند کردیا۔ 20 سے 25 لوگوں نے دروازہ توڑ دیا اور اسے لیجانے کی کوشش کی۔
ملک عدنان ہجوم کی منتیں کرتا رہا اور ان سے کہتا رہا کہ اگر اس نے کچھ کیا ہے تو پولیس کے حوالے کردیتے ہیں لیکن یہ متشدد ہجوم نہ مانا اور سری لنکن منیجر کو چھت سے نیچے لیجا کر مارنے کے بعد آگ لگا دی۔

Related Articles

Back to top button