فیکٹری انتظامیہ کی سری لنکن مینیجر کو بچانے کی کوشش کیسے ناکام ہوئی؟

سیالکوٹ فیکٹری انتظامیہ کی جانب سے قتل ہونے والے سری لنکن منیجر کو مشتعل ہجوم سے بچانے کی کوشش کی ایک نئی ویڈیو بھی سامنے آگئی ہے. اس ویڈیو میں فیکٹری سپروائزر مشتعل ہجوم کو یقین دہانی کروا رہا ہے کہ اگر مینیجر نے کوئی مذہبی اسٹیکر یا پوسٹر پھاڑا ہے تو اس کے خلاف توہین مذہب کا پرچہ درج کروایا جائے گا اور قانون کے مطابق اسے سزا بھی دلوائی جائے گی۔ سپروائزر مجمعے کو یہ بھی یقین دلواتا ہے کہ مینجر کو نوکری سے بھی برخاست کر دیا جائے گا لیکن قانون کو ہاتھ میں نہ لیا جائے۔ مگر مشتعل ہجوم لبیک یا رسول اللہ کے نعرے لگاتا ہوا فیکٹری میں داخل ہوجاتا ہے اور سری لنکن مینجر کو قتل کرنے کے بعد اس کی لاش سڑک پر پھینک کر اسے آگ لگا دیتا ہے۔

Related Articles

Back to top button