وزیر اعظم کے استعفے کے بغیر کوئی مذاکرات قبول نہیں

مولانا کے قریبی ساتھی اور رہبر کمیٹی کے سربراہ اکرم درانی کا کہنا ہے کہ ہمیں ڈرایا اور جھکایا نہیں جا سکتا ،وزیر اعظم کے استعفے کے بغیر کوئی مذاکرات قبول نہیں ۔ دو دن بعد آزادی مارچ کی شکل مختلف ہو گی۔
نیب میں پیشی کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے اکرم خان درانی کا کہنا تھا کہ نیب کی وجہ سے ملک رک گیا ملک بلیک لسٹ ہونےکی طرف جا رہا ہے۔ پاکستان کا نام ایف اے ٹی ایف کی بلیک لسٹ میں شامل ہونے کا ذمہ دار نیب ہے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ قوم کے سامنے رسوا کرنے کیلئے بلایا جاتا ہے منگل کو دوبارہ بلا لیا ہے جو پوچھنا تھا آج پوچھ لیتے۔ اکرم درانی نے مزید کہا کہ پرویز الہی سے کہتا ہوں ایسے بلاوے اور مذاکرات سے پیش رفت نہیں ہو سکتی۔ہمیں ڈرایا اور جھکایا نہیں جا سکتا۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ نیب کواپنے تمام اثاثوں کی تفصیلات دےدی ہیں۔چیلنج کرتا ہوں اثاثوں میں فرق سامنے لائیں۔ مجھے تمام اثاثے ورزاثت میں ملے۔
سابق وزیر اعلیٰ خیبر پختونخواہ اکرم درانی آمدن سے زائد اثاثہ جات، غیر قانونی بھرتیوں اور مساجد کے پلاٹس کی الاٹمنٹ کے الزامات کے حوالے سے جاری تحقیقات میں نیب کے بلاوے پر چوتھی مرتبہ نیب راولپنڈی بیورو میں پیش ہوئے اور مشترکہ تحقیقاتی ٹیم کے سوالوں کا جواب دیا۔نیب راولپنڈی کی مشترکہ تحقیقاتی ٹیم نے اکرم درانی سے اڑھائی گھنٹے تک تفتیش کی۔مختلف سوال پوچھےاور بیان ریکارڈ کیا۔
یاد رہے کہ اکرم درانی اپوزیشن جماعتوں پر مشتمل رہبر کمیٹی کے کنوینئر بھی ہیں۔ اور وہ 21 نومبر تک عبوری ضمانت پر ہیں۔ ان پر غیر قانونی طور پر بھرتیاں کرنے اور آمدن سے زائد اثاثے رکھنے کا الزام ہے۔ اکرم درانی کو پچھلےچار ہفتوں میں چوتھی مرتبہ نیب کے راولپنڈی بیورو نے طلب کیا تھا۔
یاد رہے کہ نیب سابق وزیر اعلی خیبر پختونخواہ اکرم درانی کے خلاف غیرقانونی بھرتیوں اور آمدن سے زائد اثاثہ جات کے الزامات کی تحقیقات کر رہا ہے۔سابق وفاقی وزیر اکرم خان درانی کے خلاف بطور سابق وزیر ہاؤسنگ انکوائری کی جارہی ہے اور ان پر بطور وزیر غیرقانونی تعیناتیوں، غیر قانونی اثاثے بنانے ، مبینہ کرپشن اور دو ہاؤسنگ پروجیکٹس میں بھی کرپشن کے الزامات ہیں۔ یاد رہے کہ نیب نے اکرم خان درانی اور ان کے بیٹے بنوں سے رکن قومی اسمبلی زاہد درانی کو بھی گزشتہ ماہ طلبی کے نوٹسز جاری کیے تھے۔ نیب نے آمدن سے زائد اثاثہ جات کی تحقیقات اور ہاؤسنگ فاؤنڈیشن کے دو منصوبوں ٹھیلیاں اور بہارہ کہو پراجیکٹ سے متعلق اکرم خان درانی کو 7 اکتوبر کو بھی طلب کیا تھا ۔ مذکورہ کیس میں اکرم خان درانی کے بیٹے زاہد اکرم درانی ، داماد و سابق ایم پی اے عرفان درانی ، سابق ایم پی اے ریاض خان سمیت اکرم درانی کے قریبی دوست پیش ہو چکے ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close