نواز شریف کی علاج کیلئے بیرون ملک روانگی، تمام تیاریاں مکمل

بالآخر 2 دن بعد وفاقی حکومت نےلاہور ہائیکورٹ کے احکامات پر عمل کرتے ہوئے سابق وزیر اعظم نواز شریف کو بیرون ملک جانے کی اجازت دے دی۔ وزارت داخلہ نے نواز شریف کو بیرون ملک جانے کی اجازت کا نیا میمورنڈم جاری کر دیا. نیا میمورنڈم لاہور ہائیکورٹ کے فیصلے کی روشنی میں جاری کیا گیا ہے، نئے میمورنڈم میں زرضمانت کی شرط ختم کر دی گئی ہے، وزیر داخلہ کی منظوری کے بعد نواز شریف کو ایک بار بیرون ملک جانے کی اجازت دی گئی ہے، میمورنڈم کی کاپی درخواست گزار اور امیگریشن حکام سمیت متعلقہ اداروں کو ارسال کر دی گئی، میمورنڈم کے مطابق نواز شریف اب ایک بار بیرون ملک جا سکیں گے،دوسری طرف سابق وزیر اعظم نواز شریف کی علاج کیلئے بیرون ملک روانگی کی تمام تیاریاں مکمل کر لی گئیں ہیں ۔ نواز شریف کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان کا کہنا ہے کہ سابق وزیر اعظم 19 نومبر کو ائیر ایمبولینس کے ذریعے لندن روانہ ہوں گے ۔ائیر ایمبولینس میں آئی سی یو اور آپریشن تھیٹر تک کی سہولت موجود ہو گی ، ڈاکٹرز اور پیرا میڈیکل ٹیم بھی نواز شریف کے ہمراہ ہو گی۔ سابق وزیراعظم کی حالت بدستور تشویشناک ہے اور انہیں انجائنا کی تکلیف کا بھی سامنا ہے۔ تاہم پلیٹیلیٹس تیس ہزار پر برقرارہیں۔ انجائنا کی تکلیف کی وجہ سے ڈاکٹرز نے میاں صاحب کو سٹیرائیڈز کا استعمال کم کروا دیا ہے۔


ذرائع کا کہنا ہے کہ نواز شریف کو ایمبولینس کے ذریعے لاہور ائیرپورٹ حج لاونج لایا جائے گا۔ ائیر ایمبولینس کو حج لاونج کے ساتھ پارک کیا جائے گا، سول ایوی ایشن اتھارٹی نے لاہور ائیرپورٹ مینجر سے حج ٹرمینل پر تعینات عملے کا شیڈول بھی مانگ لیا ہے، امیگریشن عملہ حج لاونج پر ہی نواز شریف اور انکے ہمراہ جانے والوں کی امیگریشن کرے گا۔
مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف اور مریم نواز کا بیٹا جنید صفدر بھی میاں نواز شریف کے ساتھ لندن روانہ ہوں گے۔ مسلم لیگ ن کی ترجمان مریم اورنگزیب کے مطابق نواز شریف منگل کو بیرون ملک علاج کے لیے روانہ ہوں گے۔۔میاں نواز شریف کو لیجانے کے لئے ائیر ایمبولینس منگل کی صبح پہنچے گی۔ ڈاکٹرز نے محمد نواز شریف کا تفصیلی معائنہ کیا ہے۔ سابق وزیر اعظم کو سفر کے قابل بنانے کے لئے ڈاکٹرز نے آپس میں صلاح مشورہ کیا۔ مسلم لیگ ن کی مرکزی ترجمان نےمزید کہا کہ بیرون ملک فضائی سفر کے دوران نواز شریف کے پلیٹ لیٹس برقرار رکھنے، دل کی کسی ممکنہ تکلیف سے بچاؤ کے لیے ڈاکٹرز طبی احتیاطوں کی تیاری کے عمل میں ہیں،ڈاکٹرز اس اَمر کو یقینی بنانے کی تگ و دو میں ہیں کہ دوران سفر کسی ممکنہ ایسی طبی پیچیدگی سے بچا جاسکے جو نواز شریف کی زندگی کے لیے مہلک ثابت ہوسکتی ہو۔ انہوں نے کہا کہ ڈاکٹرز کی اولین کوشش نواز شریف کے پلیٹ لیٹس کو اس محفوظ سطح پر لانا ہے جس سے وہ بحفاظت سفر کر سکیں، انھوں نے مزید کہا کہ ڈاکٹرز کی طرف سے سٹیرائیڈز کے ساتھ دیگر ادویات بھی ردوبدل کے ساتھ استعمال کی جارہی ہیں جبکہ سٹیرائیڈز اور ادویات کے زیادہ مقدار میں استعمال سے ہونے والے سائیڈایفکٹس کو کنٹرول میں لانے کی بھی کوشش جاری ہے۔ ڈاکٹرز ان ممکنہ خطرات کو بھی پیش نظر رکھ کر ادویات دے رہے ہیں جو ہوائی سفر کے دوران ممکنہ طورپر پیش آسکتے ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close