عاصم سلیم باجوہ چئیرمین سی پیک اتھارٹی مقرر

بیک فٹ پر جا کر اپنی وکٹ بچانے والے وزیر اعظم عمران خان نے اسٹیبلشمنٹ سے تعلقات کو بہتر بنانے کیلئے عملی اقدامات شروع کردئیے ہیں۔ وفاقی حکومت نے 23 ستمبر کو بطور کور کمانڈر کوئٹہ ریٹائر ہونے والے سابق ڈی جی آئی ایس پی آر لیفیٹننٹ جنرل ریٹائرڈ عاصم سلیم باجوہ کو چئیرمین سی پیک اتھارٹی کے اہم ترین عہدے پر مقرر کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ یاد رہے کہ عاصم سلیم باجوہ کو موجودہ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کا قریبی خیال کیا جاتا ہے.
ذرائع کے مطابق اسٹیبلشمنٹ ڈویژن نے نئے چئیرمین سی پیک اتھارٹی کی تعیناتی کیلئے سمری وزیر اعظم آفس کو بھجوادی ہے جس کے بعد اب اسٹیبلشمنٹ ڈویژن کو نئے چئیرمین سی پیک اتھارٹی تعیناتی کیلئے وزیر اعظم عمران خان کی منظوری کا انتظارہے۔ وزیر اعظم کی منظوری کے بعد باقاعدہ سمری اسٹیبلیشمنٹ ڈویژن کو واپس بھجوائی جائے گی۔ وزیر اعظم کی منظوری کے بعد اسٹیبلشمنٹ ڈویژن لیفیٹننٹ جنرل ریٹائرڈ عاصم سلیم باجوہ کی تقرری کا نوٹیفکیشن جاری کرے گا۔ عاصم سلیم باجوہ کو چار سال کیلئے چئیرمین سی پیک اتھارٹی تعینات کیا جائے گا۔
واضح رہے کہ لیفٹیننٹ جنرل عاصم سلیم باجوہ کمانڈر سدرن کمانڈ تعیناتی کے دوران 23 ستمبر 2019 کو ریٹائرڈ ہوئے تھے اس سے قبل 2012 سے 2016 کے دوران وہ ڈی جی آئی ایس پی آر بھی رہ چکے ہیں۔
سی پیک اتھارٹی کے قیام کا مقصد سی پیک سے متعلق تعمیری سرگرمیوں کی رفتار بڑھانے اور ترقی کے نئے امکانات تلاش کرنا ہے۔ تمام متعلقہ محکموں کے مابین روابط کو یقینی بنانے کیلئے اگست 2018 میں وزیراعظم عمران خان نے سی پیک اتھارٹی کے قیام کا اعلان کیا تھا جبکہ 08 اکتوبر 2019 کو صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے پاک چین اقتصادی راہداری (سی پیک) اتھارٹی کے قیام کے حوالے سے آرڈیننس پر دستخط کئے تھے۔
تجزیہ نگاروں کا خیال ہے کہ عاصم سلیم باجوہ کی بطور چیئرمین سی پیک اتھارٹی کا ایک اور مقصد حکومت اور اسٹیبلشمنٹ کے مابین بڑھتے ہوئے فاصلوں کو کم کرنا ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close