ای سی پی اراکین کی تقرری، پارلیمانی کمیٹی کا اجلاس طلب

الیکشن کمیشن کو غیر فعال ہونے سے بچانے کےلیے حکومت اور اپوزیشن جماعتیں سرگرم ہو گئیں، الیکشن کمیشن اراکین کےلیے تجویز کردہ نام پر غور کےلیے پارلیمانی کمیٹی کا اجلاس طلب۔
وفاقی وزیر برائے انسانی حقوق ڈاکٹر شیریں مزاری کی سربراہی میں پارلیمانی کمیٹی سندھ اور بلوچستان کے لیے وزیر اعظم اور اپوزیشن کی جانب سے نامزد کردہ 3، 3 نام پر فیصلہ کیا جائے گا۔
یاد رہے کہ چیف الیکشن کمشنر جسٹس(ر) سردار محمد رضا 6 دسمبر کو اپنے عہدے سے سبکدوش ہوجائیں گے جس کے بعد یہ عہدہ خالی ہوجائے گا۔
قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف شہبازشریف نے چیف الیکشن کمشنر کے تقرر کےلیے 3 نام وزیراعظم کو بھجوائے جن میں ناصر سعید کھوسہ، جلیل عباس جیلانی اور اخلاق احمد تارڑ کے نام شامل ہیں تاہم عمران خان کی جانب سے ناموں کی تجویز کی جانی باقی ہے۔
شہباز شریف نے چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی اور قومی اسمبلی کے اسپیکر اسد قیصر کو بھی خط ارسال کرکے ای سی پی اراکین میں سندھ کےلیے نثار درانی، جسٹس(ر) عبدالرسول میمن اورنگزیب حق کے نام جب کہ رکن بلوچستان کےلیے شاہ محمود جتوئی ایڈووکیٹ، سابق ایڈووکیٹ جنرل محمد رؤوف عطا اور راحیلہ درانی کے نام تجویز کیے۔
اسی طرح وزیراعظم عمران خان نے چیئرمین سینیٹ اور اسپیکر قومی اسمبلی کو سندھ اور بلوچستان سے الیکشن کمیشن کے اراکین کےلیے 3، 3 نام کی تجویز کردی۔
عمران خان نے سینیٹ چیئرمین صادق سنجرانی اور اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کو خط لکھ کر الیکشن کمیشن کے اراکین کی تجویز دی۔
وزیراعظم نے سندھ کےلیے جسٹس (ر) صادق بھٹی، جسٹس (ر) نورالحق قریشی اور عبدالجبار قریشی اور بلوچستان کےلیے وزیر اعظم نے ڈاکٹر فیض محمد کاکڑ، میر نوید جان بلوچ اور امان اللہ بلوچ کے نام تجویز کیے۔
خیال رہے کہ الیکشن کمیشن پاکستان میں سندھ اور بلوچستان کے اراکین جنوری میں ریٹائر ہوئے تھے اور آئین کے مطابق ان عہدوں پر 45 دن میں اراکین کا تقرر ہوجانا چاہیے تھا تاہم اپوزیشن اور حکومت کے اختلافات کے باعث نہ ہوسکا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close