شرمین عبید کی اینیمیٹڈ فلم ‘ستارہ’ ایوارڈ جیتنے میں کامیاب

پاکستان کی نامور فلم ساز اور آسکر ایوارڈ یافتہ شرمین عبید چنائے کی فلم ‘ستارہ’ کو لاس اینجلس میں منعقد 2019 کے اینیمیٹڈ ایوارڈز کے دوران تین ایوارڈز سے نواز دیا گیا۔ستارہ: لیٹ دی گرلز ڈریم’ کو اس تقریب کے دوران بہترین اسکرین پلے، بہترین میوزک اسکور اور ہیومنیٹیرین ایوارڈ دیے گئے۔اس فلم کی کہانی بھی شرمین عبید نے تحریر کی، جبکہ اس کی ہدایات بھی انہوں نے ہی دی ہے۔
فلم کی کہانی ایک نوجوان لڑکی ‘پری’ کے گرد گھومتی ہے جو پائلٹ بننے کا خواب دیکھتی ہے البتہ کم عمر میں ہی اس کی شادی کردی جاتی ہے۔فلم میں اس نوجوان لڑکی کی کہانی اس کی چھوٹی بہن کے نظریے سے دکھائی گئی۔فلم میں دکھایا گیا ہے کہ ستارہ اپنی 6 سالہ بہن کے ساتھ کھیلتے اور پائلٹ بننے کے سپنے دیکھتی رہتی ہے اور اسی دوران ان کے والدین ان کی شادی طے کر لیتے ہیں۔

فلم میں دکھایا گیا ہے کہ کھیلنے کودنے کے دنوں میں اپنی بڑی بہن کو سرخ جوڑے میں دیکھ کر ان کی کمسن بہن رو پڑتی ہیں اور انہیں کچھ سمجھ نہیں آتا۔فلم کی سب سے خاص بات یہ ہے کہ اس میں کوئی بھی ڈائلاگ نہیں پھر بھی فلم کی کہانی دیکھنے والوں کے دل کو نہ صرف چھوتی ہے بلکہ حساس دل افراد کو رونے پر بھی مجبور کرتی ہے۔فلم کو لاس اینجلیس میں ملنے والے اعزازات کے حوالے سے شرمین عبید نے اپنے بیان میں کہا کہ ‘ہم بےحد خوش ہیں کہ بین الاقوامی سطح پر پاکستان کی نمائندگی کررہے ہیں، ہمارے فنکار اور اینیمیٹرز بہت محنت کرتے ہیں اور ہم اپنی فلم کو دنیا کے سامنے لاکر بےحد پرجوش ہیں۔
شرمین عبید نے اس پروجیکٹ کے حوالے سے ماضی میں کہا تھا کہ میرے لیے ستارہ فلم سے بڑھ کر ہے، یہ ایک مہم ہے جس کا آغاز میں دنیا بھر میں کرنا چاہتی ہوں، تاکہ والدین کو حوصلہ ملے کہ وہ اپنی بیٹیوں کو آگے بڑھائیں ، ان کے خوابوں کو پورا کریں اور ان کا حوصلہ بڑھائیں تاکہ ان کے ذہن سے کم عمر میں شادی کا خوف نکل سکے۔اس فلم کی پروڈکشن میں شرمین عبید چنائے کے فلمی ادارے کا ساتھ عالمی پروڈکشن ہاؤسز نے دیا ہے، جنہوں نے متعدد عالمی فلمی ایوارڈ بھی جیت رکھے ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

error: Content is protected !!
Close