انسان سےانسان میں منتقل ہونےوالےمہلک وائرس کےپھیلنےکی تصدیق

چین نےانسان سےانسان میں منتقل ہونےوالےمہلک وائرس ‘ایس اےآرایس’ کے پھیلنےاوراس کی وجہ سے4افراد کی ہلاکت کی تصدیق کردی۔ ذرائع کےمطابق کورونا وائرس پہلی مرتبہ ووہان کےعلاقے میں سامنےآیا تھا جس کےتعلقات ایس اےآرایس سےبتائےگئےہیں جس نے2002 اور2003میں چین اور ہانگ کانگ میں650افراد کی جان لےلی تھی۔ اس وائرس سےمتاثرہونےوالےافراد کی کل تعداد بڑھ کر 218 ہوچکی ہےجبکہ چین کےبڑے شہربیجنگ اورشنگھائی میں بھی اس وائرس کےکیسزکی تصدیق کردی گئی ہے۔
چین کے سرکاری نشریاتی ادارے کی رپورٹ کےمطابق جنوبی گوانگ ڈونگ صوبےمیں درجن سے زائدافراد میں یہ وائرس سامنےآیاجبکہ’ووہان’ شہرمیں رواں ہفتے136نئےکیسزسامنےآئےہیں۔ انسان سےانسان میں منتقل ہونےوالےاس وائرس کوایسےوقت میں دریافت کیا گیا ہےجب چین میں نئےسال کی خوشیاں منانےکےلیےدیگرممالک سےلوگ بسوں، ٹرینوں اورطیاروں میں چین کاسفرکررہےہیں۔آسٹریلیا،بنگلہ دیش، ہانگ کانگ، نیپال، سنگاپور، تھائی لینڈ، تائیوان اورامریکا میں بخارکی تشخیص سمیت حفاظتی اسکریننگ کے اقدامات اٹھائے جارہے ہیں جن کی زیادہ ترتوجہ چینی شہرووہان سے آنےوالی پروازوں پرہےجہاں سےیہ وائرس پھیلاہے۔
صحت حکام کا کہنا تھا کہ ووہان کی ایک مچھلیوں کی مارکیٹ اس وائرس کے پھیلنے کا مرکز تھی جبکہ 89 سالہ شخص کی ہلاکت کے بعد اس وائرس سے مرنے والوں افراد کی مجموعی تعداد 4 ہوگئی ہے جبکہ 15 میڈیکل اسٹاف بھی اس مرض میں مبتلا ہوچکے ہیں۔شنگھائی میں اب تک 2 کیسز کی تصدیق ہوچکی ہے جبکہ بیجنگ میں 5 افراد میں اس بیماری کی تشخیص ہوئی۔یہ وائرس اب جاپان، تھائی لینڈ اور جنوبی کوریا بھی پہنچ چکا ہے جہاں چینی شہر ووہان کا دورہ کرنے والے4 افراد ہسپتال میں داخل کیے گئے ہیں۔آسٹریلیا کے صحت حکام کا کہنا تھا کہ اس بیماری کی نشانیاں ظاہرہونے پر ایک شخص کوعلیحدہ کردیا گیا ہے جبکہ اس کےٹیسٹ کےنتائج آنےکا انتظارکیا جارہا ہے۔
عالمی ادارہ صحت کا ہنگامی اجلاس
ذرائع کےمطابق چین کے قومی صحت کمیشن کےمعروف سائنسدان ژونگ نانشان نےتصدیق کی کہ وائرس انسان سےانسان میں منتقل ہوتا ہے۔عالمی ادارہ صحت نےاس سےقبل نشاندہی کی تھی کہ یہ جانوروں سےپھیل سکتا ہےتاہم خدشہ ظاہرکیا تھا کہ چند مقامات پریہ انسان سےانسان میں بھی منتقل ہوسکتا ہے۔ ژونگ نانشان نے بتایا کہ مریضوں کویہ وائرس ووہان شہرجائےبغیربھی لگ سکتا ہے۔ عالمی ادارہ صحت کا کہنا تھا کہ مرکزی ہنگامی کمیٹی کااجلاس بدھ کےروزہوگاجس میں اسےبین الاقوامی عوامی ایمرجنسی قراردیا جائےگا۔ ایجنسی کی جانب سےاس طرح کی ایمرجنسی صورتحال نافذ کرنے کا معاملہ بہت کم دیکھنے کو ملا ہے جس کی وجہ سےاسے بہت اہمیت دی جارہی ہے۔کورونا وائرس سے متاثر ہونے والے افراد کی تعداد میں اضافے کی امید ہے۔
خوف و ہراس
چینی حکومت نےاعلان کیا ہےکہ وہ اس وائرس کےپھیلاؤ کوایس آراے ایس کی کیٹیگری میں شامل کررہےہیں جس کا مطلب ہے کہ جن افراد میں اس وائرس کی تشخیص ہوانہیں علیحدہ کیا جانا ضروری ہےاوران کےسفرکوبھی روکا جانا چاہیے۔ چینی صدرشی جن پنگ کا کہنا تھا کہ ‘وائرس کو لازمی طور پرایک جگہ بند کرنا ہوگا’۔وائرس کےپھیلنےکےبعدعوام سےخطاب کرتےہوئےانہوں نےزوردیا کہ اس حوالےسےمعلومات بروقت جاری کی جائیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close