ڈیڑھ ٹن وزنی دنیا کی سب سے بڑی کتاب

وسطی یورپ کے ملک ہنگری کے قصبے زنپیٹری کی آبادی صرف تین سو نفوس پر مشتمل ہے لیکن یہاں دنیا کی سب سے بڑی کتاب رکھی ہے جسے مکمل طور پر ہاتھوں سے بنایا گیا ہے۔ اس کی جلد پر ارجنٹینا کی 13 گائے کی کھال سے بنا چمڑا لگایا گیا ہے۔
کاغذ سازی کے ماہر باپ اور اس کے بیٹے یعنی بیلا ورگا اور گائبور ورگا نے کئی برس کی محنت کے بعد 2010 میں یہ کتاب مکمل کی تھی۔ اگرچہ اس پرچرمی جلد بھی روایتی انداز میں ہی ہاتھ سے لگائی گئی ہے کہ لیکن اس کی تیاری میں بھی بہت عرصہ لگا ہے۔ اس کتاب کا وزن 1420 کلوگرام ہے اور لمبائی 4.18 میٹر اور چوڑائی 3.77 میٹر ہے۔

ہمارا نازک فطری اثاثہ کے عنوان سے بنائی گئی یہ کتاب اب بھی دنیا کی سب سے بڑی کتاب ہے جسے ہاتھوں سے بنایا گیا ہے۔ کتاب میں کل 346 صفحات ہیں جس میں ہنگری کے جانوروں اور پیڑ پودوں کا تذکرہ ہے جسے خوبصورت تصاویر سے سجایا گیا ہے۔ بیلا ورگا نے کہا کہ ہمارے لیے اس سے بڑی کتاب بنانا ناممکن تھا۔ ان کے مطابق جس طرح پرانے زمانے میں روایتی طریقے سے کاغذ بنائے جاتے تھے عین اسی طرح یہ پوری کتاب مرتب کی گئی ہے۔
اس کی تیاری کےلیے جو کاغذ ڈھالا گیا اس کےلیے خاص میزیں اور سامان سوئزرلینڈ سی منگوایا گیا تھا۔ جب کہ ارجنٹینا سے گائے کی کھال سے بنا چمڑا خریدا گیا تھا۔ کتاب کے سارے کنارے لیزر شعاعوں سے تراشے گئے اور کاغذ ایک خاص فیکٹری سے منگوایا گیا جو آسٹریا میں واقع ہے۔ پرنٹنگ کےلیے آرڈر پر ایک بڑا پرنٹر بنوایا گیا جو بڑے بڑے اشتہارات چھاپتا ہے۔ اس کتاب کو درمیان سے کھولنے کےلیے چھ افراد کی ضرورت ہوتی ہے!

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close