تجارتی مراکز 10 مئی سے کھولنے کی اجازت دینے کا امکان

وفاقی اور صوبائی حکومتوں کی جانب سے اتفاق رائے ہونے پر ملک بھر میں تجارتی مراکز 10 مئی سے کھولے جانے کا قوی امکان موجود ہے۔ ملک بھر میں جاری کوروناو ائرس کی صورتحال کا جائزہ لینے کے لئے وزیراعظم عمران خا ن نے 7 مئی کو قومی رابطہ کمیٹی کا اجلاس طلب کر لیا ہے جس میں ممکہ طور پر ک ڈاون نرمی کے ساتھ ایس او پیز کی بھی منظوری دی جائے گی۔7 مئی کو ہونے والے اجلاس میں وفاقی وزراء اور عسکری حکام شریک ہوں گے۔ اس کے علاوہ چاروں وزرائے اعلٰی اور گلگت بلتستان کے وزیراعلٰی بھی شریک ہوں گے. ذرائع کے مطابق اجلاس میں اندرون ملک پروازیں چلانے پر بھی غور کیا جائے گا۔نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر لاک ڈاون میں نرمی سے متعلق آج سفارشات تیار کرے گا جس کے بعد ان سفارشات کو کل قومی رابطہ کمیٹی کے اجلاس میں پیش کیا جائے گا۔
کل ہونے والے رابطہ کمیٹی کے اجلاس کے بارے میں امید کی جا رہی ہے کہ 10 مئی سے تجارتی مراکز کھولنے کی اجازت دے دی جائے گی او ممکنہ طور پر رابطہ کمیٹی کے اجلاس کے بعد وزیراعظم عمران خان کل قوم کو اعتماد میں لینے کے لئے خطاب کریں گے۔
خیال رہے کہ اس وقت ملک بھر میں لا ک ڈاؤن کی وجہ سے زیادہ تر کاروباری مراکز بند ہیں جس کی وجہ سے لوگوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ تاجروں کی جانب سے بار بار احتجاج بھی کیا جا رہا تھا کہ انہیں کاروبار کرنے کی اجازت دی جائے لیکن ابھی تک انہیں کسی قسم کا جواب نہیں دیا گیا تھا۔ لیکن اب کہا جا رہا ہے کہ کل ہونے والے رابطہ کمیٹی کے اجلاس میں تجاورتی مراکز 10 مئی کے بعد کھولے جانے کا قوی امکان موجود ہے۔ ۔ ملک بھر میں جاری کوروناو ائرس کی صورتحال کا جائزہ لینے کے لئے وزیراعظم عمران خا نے کل قومی رابطہ کمیٹی کا اجلاس طلب کر لیا ہے جس میں ممکہ طور پر ک ڈاون نرمی کے ساتھ ایس او پیز کی بھی منظوری دی جائے گی.

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close