عمران خان کو نامرد ثابت کرنے کی ریحام کی بھونڈی کوشش

اپنے ویڈیو بیانات اور ٹویٹس میں سابقہ شوہر وزیراعظم عمران خان پر مسلسل تنقید کرنے والی ریحام خان ایک حالیہ انٹرویو میں کپتان کو جنسی طور پر کمزور شخص قرار دینے کے بعد سوشل میڈیا پر شدید تنقید کی زد میں ہیں۔ تاہم وقار ذکا کے ساتھ انٹرویو میں اپنی نجی زندگی سے متعلق ننگی گفتگو کرنے والی ریحام خان نے تنقید کی زد میں آنے کے بعد اب یہ بھونڈا مؤقف اپنایا ہے کہ انٹرویو میں میزبان کی جانب سے اس قسم کا سوال پوچھا ہی نہیں گیا تھا بلکہ بعد ازاں ان کے ریکارڈ شدہ ویڈیو انٹرویو کو ایڈٹ کرنے کے بعد توڑ مروڑ کر پیش کیا گیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ ایسا کر کے میزبان وقار ذکاء صحافتی بد دیانتی کے مرتکب ہوئے ہیں۔ لیکن اگر اس انٹرویو کی ویڈیو کو بغور دیکھا جائے تو صاف معلوم ہوتا ہے کہ وقار ذکاء نے ریحام خان سے انکے دونوں سابقہ شوہروں کی جنسی کارکردگی کے حوالے سے سوال کیا اور ریحام نے فورا جواب دیا۔
خیال رہے کہ میزبان وقار ذکاء نے ہیڈ فون شو کے نام سے ایک منفرد شو متعارف کروایا ہے جس میں وہ اب تک کئی نامور شخصیات کے ویڈیو انٹرویوز کرچکے ہیں۔ وقار ذکاء نے حالیہ دنوں وزیراعظم عمران خان کی سابق اہلیہ ریحام خان سے بھی انٹرویو کیا جس میں انتہائی بولڈ سوالات پوچھے گئے۔
اس متنازعہ انٹرویو میں جو سب سے زیادہ متنازع بات سامنے آئی وہ یہ تھی کہ وقار ذکاء نے ریحام خان سے ان کے پہلے شوہر اور دوسرے شوہر عمران خان کی جنسی قوت کا موازنہ کرنے کو کہا تو ریحام خان نے شرم و حیا کی تمام حدیں پار کرتے ہوئے بڑے فخر سے یہ بتایا کہ ان کے پہلے شوہر ڈاکٹر اعجاز رحمان جنسی طور پر زیادہ مضبوط انسان تھے اور یہ کہ عمران خان اس حوالے سے کمزور مرد ثابت ہوئے۔ تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ شاید ریحام خان کے اس انکشاف کا واحد مقصد عمران خان کو نامرد ثابت کرنا ہے۔
اس کے بعد میزبان وقار ذکاء نے ریحام خان کو آئینہ دکھاتے ہوئے ان کی سوانح حیات میں سے بعض حوالے دے کر سوال پوچھا کہ آپ خود لکھ چکی ہیں کہ عمران خان کسی خوبرو نوجوان لڑکی تو کیا بڑی عمر کی عورت کے ساتھ بھی جنسی تعلقات سے ہچکچاتے نہیں تھے اور اب آپ کہہ رہی ہیں کہ عمران نے میری پوری طرح سے تسلی نہیں کروائی، کیا یہ کھلا تضاد نہیں ہے۔
اس سوال پر ریحام نے دلیل دینے کی بجائے آئیں بائیں شائیں کرنا شروع کر دیا۔ انٹرویو کے دوران میزبان نے اور بھی کئی انتہائی بولڈ اور نجی سوالات پوچھے جنکے ریحام نے کسی قسم تامل یا شرمندگی کے بغیر جواب دئیے۔
وقار ذکا نے ریحام خان سے زیادہ تر ان کی کتاب میں کیے گئے دعووں سے متعلق سوالات کیے جو انھوں نے عمران سے علیحدگی کے بعد لکھی تھی۔ وقار ذکا نے دوران انٹرویو ایک موقع پر ریحام سے عمران کے ساتھ گزارے گئے وقت اور ان کی نجی زندگی کے بارے میں لکھی باتوں کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ ایک دوسرے کا پردہ رکھنا چاہیے ،کیا آپ ایسی باتوں پر معافی مانگنا چاہیں گی؟۔ جواب میں ریحام خان نے راہ فرار اختیار کرتے ہوئے بہانہ کیا کہ مغرب کی نماز کا وقت ہو گیا ہے۔
اس انٹرویو کے بعد سوشل میڈیا صارفین کی جانب سے ریحام پر شدید تنقید کی جا رہی ہے کہ ایک مطلقہ عورت کس فخر کے ساتھ اپنے سابق شوہروں کی جنسی قوت کا موازنہ کر رہی ہے حالانکہ نہ تو دین اسلام سابق شوہروں یا بیویوں پر اس طرح رکیک حملے کرنے کی اجازت دیتا ہے اور نہ ہی ہماری اخلاقیات۔
اپنے سابق شوہر کے ساتھ گزارے نجی لمحات اور ان کی جنسی قوت سے متعلق ہذیان گوئی کے بعد جب ہر طرف سے ریحام پر تنقید کے تیر چلنے لگے تو اس ننگ انسانیت خاتون نے ٹوئٹر پیغام میں وقار زکا کو ’بزدل‘ کہہ کر دعویٰ کیا کہ اس ریکارڈد انٹرویو کو ایڈٹ کرکے سیاق و سباق سے ہٹ کر اس لئے پیش کیا گیا ہے تاکہ میری ساکھ خراب ہو اور ریٹنگ حاصل کی جائے۔
متنازعہ انٹرویو پر شورو غوغا کے بعد ریحام خان نے یہ دعویٰ بھی کیا کہ یہ ہو ہی نہیں سکتا کہ کوئی اینکر ان سے انکی جنسی زندگی کے متعلق سوال پوچھے، کہنے لگیں کہ کیا میں کسی کو اپنے ساتھ اس طرح کی بات کرنے دوں گی۔ دوسری جانب ریحام کے دعوے پر وقار ذکا بھی پیچھے نہ رہے اور انہیں پھر سے اپنے شو پر لائیو آنے کی دعوت دیتے ہوئے کہا کہ لائیو سوالات میں دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہو جائے گا۔
مگر سوشل میڈیا صارفین کہتے ہیں کہ ریحام اب قیامت تک وقار ذکاء کےشو میں جانے والی نہیں کیونکہ گذشتہ دو برسوں سے کپتان پر کیچڑ اچھال کر ناکام و نامراد رہنے والی ریحام کو لینے کے دینے پڑ گئے ہیں کیونکہ بطور خاتون انہیں جو تھوڑی بہت عزت ملتی تھی، اب وہ بھی نہیں ملے گی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close