مجھ سے نفرت کرنے والے لوگ بھی میرے گانے سنتے ہیں


گلوکار علی ظفر پر ہراسانی کے الزامات لگانے کے بعد مقدمات کا سامنا کرنے والی گلوکارہ میشا شفیع کا کہنا ہے کہ وہ اس بات پر شرط لگانے کو تیار ہیں کہ جو لوگ ان سے نفرت کرتے ہیں, وہ بھی چھپ کر ان کے گانے سنتے ہیں۔ گلوکارہ نے کہا کہ وہ یہ بات خوش فہمی کی بنیاد پر نہیں کر رہیں بلکہ یہ ایک حقیقت ہے۔ میشا کے اس بیان کے بعد سوشل میڈیا پر کئی لوگ یہ سوال کرتے دکھائی دیتے ہیں کہ کیا انہوں نے علی ظفر کی طرف اشارہ کیا ہے جو کہ ان سے نفرت کرتے ہیں اور پچھلے کچھ سالوں سے ان کے خلاف عدالتی کارروائی میں مصروف ہیں۔
ایک انٹرویو میں میشا شفیع نے اپنی زندگی کے آخری ڈھائی سال اور کیریئر کے حوالے سے کھل کر بات کی اور یہ بھی بتایا کہ حال ہی میں انہیں ویلو میوزک اسٹیشن اور کوک اسٹوڈیو کےلیے گانے تیار کرنے میں کن مشکلات کا سامنا رہا۔
میشا نے اپنی زندگی کے پچھلے ڈھائی سال پر بھی بات کی اور بتایا کہ کس طرح انہیں مشکلات کا سامنا رہا، تاہم ساتھ ہی بتایا کہ انہیں اپنے چاہنے والوں، مداحوں اور ساتھی فنکاروں کی مدد میسر رہی۔ میشا شفیع نے بتایا کہ کس طرح انہوں نے پاکستان اور کینیڈا کے وقت میں فرق کی وجہ سے کینیڈا میں رات جاگ کر اپنے ویلو اسٹیشن اور کوک اسٹوڈیو کے گانوں کے ریلیز ہونے کا انتظار کیا۔ میشا شفیع نے یہ انکشاف بھی کیا کہ کوک اسٹوڈیو میں ریلیز کیا گیا ان کا گانا ‘نہ ٹُٹیا وے’ انہوں نے پہلی بار مکمل طور پر اس دن ہی سنا جب اسے عام عوام کےلیے ریلیز کیا گیا۔ انہوں نے بتایا کہ کرونا کی وبا کے باعث مذکورہ گانے کو ٹکڑوں ٹکڑوں میں ریکارڈ کیا گیا اور اسے ایڈٹ کرنے کے بعد انہیں نہیں سنایا گیا بلکہ براہ راست جاری کیا گیا۔ یاد رہے کہ میشا شفیع نے نومبر اور دسمبر 2020 میں ایک کے بعد ایک بہترین گانا جاری کرکے جہاں مداحوں کے دل جیتے، وہیں ان کے گانوں نے کامیابیوں کے نئے ریکارڈز بھی بنائے۔
دلچسپ بات یہ ہے کہ میشا شفیع کے آخری تین مہینوں میں جاری ہونے والے گانوں کی تیاری میں کرونا کی وبا کے باعث انہیں مشکلات کا سامنا رہا اور انہوں نے بھی اپنے گانے اس وقت ہی سنے جب وہ ہر کسی کےلیے ریلیز کیے گئے۔
ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے انکشاف کیا کہ ویلو میوزک اسٹیشن کےلیے انہوں نے بلال مقصود کو نازیہ حسن کے معروف گانے ‘بوم بوم’ کی تجویز دی تھی۔
میشا شفیع کے مطابق ‘بوم بوم’ گانا انتہائی مشکل ہے اور اگرچہ پاکستان میں ماضی کے کئی مقبول گانوں کو نئے انداز میں گایا جا چکا ہے مگر مذکورہ گانے کو ان سے قبل کسی نے نہیں گایا، کیوں کہ وہ بہت مشکل ہے۔ میشا کے مطابق حالیہ تین مہینوں میں ریلیز ہونے والے ان کے تمام گانوں میں سب سے زیادہ مقبول ‘بوم بوم’ ہوا ہے، تاہم ‘نہ ٹُٹیا وے’ کو بھی سراہا جا رہا ہے جب کہ ‘سکل بن’ کو پڑوسی ملک بھارت اور خاص طور پر دہلی میں سراہا جا رہا ہے۔
انہوں نے یہ انکشاف بھی کیا کہ ان کے آباؤ اجداد کا تعلق بھی دہلی سے تھا اور بھارت میں ان کے سب سے زیادہ مداح اسی شہر سے ہیں۔ میشا شفیع نے پچھلے 2 سال میں اپنی زندگی میں آنے والی تبدیلیوں پر بھی بات کی اور کسی بھی واقعے یا موضوع کا نام لیے بغیر بتایا کہ گزشتہ 2 سال سے وہ زیادہ تر خاموش رہیں اور جب ان پر دائیں، بائیں اور آگے سے حملے کرکے انہیں تنہا کردیا گیا تو مداحوں نے ان کا ساتھ دیا۔
گلوکارہ نے بتایا کہ وہ گزشتہ 2 سال میں کئی بار تنہائی میں اشک بار بھی ہوئیں، تاہم انہیں مداحوں اور ساتھی فنکاروں کی حمایت نے مضبوط کیا۔ گلوکارہ نے اپنی تخلیقی صلاحیت پر بات کرتے ہوئے بتایا کہ جلد ہی وہ میوزک البم ریلیز کرنے کا ارادہ رکھتی ہیں۔ میشا شفیع کے مطابق وہ گزشتہ چند سال سے ایک میوزک ایلبم پر کام کر رہی ہیں، تاہم حال ہی میں زندگی میں پیش آنے والے واقعات اور کورونا کی وبا کی وجہ سے اس کی ریلیز میں تاخیر ہو رہی ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

گوگلیٰ انگلش»
error: Content is protected !!
Close