آئی ایم ایف پاکستان کے قرض پروگرام کو 1سال کی توسیع دینے پر رضامند

انٹرنیشنل مانیٹری فنڈ نے پاکستان کے قرض پروگرام میں ایک سال کی توسیع پر رضامندی ظاہر کرتے ہوئے شرائط پوری کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل، گورنر اسٹیٹ بینک اور وزیر مملکت برائے خزانہ ڈاکٹر عائشہ غوث پاشا کی آئی ایم ایف وفد سے ملاقات واشنگٹن میں ہوئی، تین روز میں آئی ایم ایف سے بات چیت کے 4 دور ہوئے، معاشی اصلاحات کے لیے آئی ایم ایف کے روڈ میپ پر عمل درآمد جاری رکھنے پراتفاق ہوا، بجلی اور پٹرول پر سبسڈی مرحلہ وار ختم کی جائے گی، بجلی کے نقصانات کم کرنے کی یقین دہانی کرائی گئی۔ آئی ایم ایف غریب طبقے کے لیے سبسڈیز جاری رکھنے پر رضا مند ہوگیا، انکم اسپورٹ پروگرام، صحت سہولت کارڈ پر بھی کوئی اعتراض نہیں۔

ملاقات میں پاکستان نے یقین دلایا ہے کہ اسٹیٹ بینک کی خود مختاری کے لیے کوششیں کی جائیں گی، رواں ماہ پاکستان اور آئی ایم ایف کی ٹیکنیکل ٹیمیں پروگرام کی توسیع پر کام کریں گی۔

آئی ایم ایف اور پاکستان کے مذاکرات کے اعلامیہ کے مطابق پاکستانی وفد اور آئی ایم ایف کے حکام کے درمیان کئی ملاقاتیں ہوئیں، آئی ایم ایف کی ڈپٹی مینجنگ ڈائریکٹر اینٹونیٹ سیہ، ڈائریکٹر ایم سی ڈی جہاد ازور اور مشن چیف ناتھن پورٹر شامل تھے، وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل کی سربراہی میں وزیر مملکت عائشہ غوث پاشا، گورنر اسٹیٹ بنک اور دیگر حکام شامل تھے، وفد نے ساتویں جائزہ کو مکمل کرنے کے طریقوں پر تبادلہ خیال کیا۔

وزیر خزانہ نے عالمی منڈی میں تیل کی قیمتوں کے اتار چڑھاؤ سے غریب طبقے کو محفوظ رکھنے کے اقدامات پر روشنی ڈالی، عالمی تیل کی قیمتوں اور مالیاتی نظم و ضبط لانے کے لئے حکومت کی ترجیحات اور کوششوں کو بھی بیان کیا جبکہ آئی ایم ایف نے پاکستانی وفد سے مکمل حمایت کا اظہار کیا۔

ملکی زرمبادلہ ذخائر میں 1.69 کروڑ ڈالر کا اضافہ

اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ پاکستانی وفد کی ورلڈ بینک کے ایم ڈی ایکسل وان ٹراٹسنبرگ، نائب صدر ہارٹ وِگ شیفر اور دیگر عہدیداروں سے بھی ملاقات ہوئی، جاری پروگرام، قرضوں اور منصوبوں کی پیشرفت کے ساتھ ساتھ مزید امداد کے مواقع پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا، وزیر خزانہ نے بینک کی طرف سے فراہم کی جانے والی مالی اور تکنیکی مدد پر بینک حکام کا شکریہ ادا کیا جبکہ ایم ڈی آپریشنز نے بھی پاکستان کو مکمل تعاون کی یقین دہانی کرائی۔

اعلامیہ کے مطابق آئی ایم ایف کا مشن مئی میں پاکستان کا دورہ کرے گا، آئی ایم ایف وفد حکومت کی اعلان کردہ پٹرول اور بجلی پر سبسڈی سے متعلق امور پر تبادلہ خیال کرے گا۔

Related Articles

Back to top button