ترکیہ میں دھماکہ،6 افراد ہلاک ،53زخمی ہوگئے

ترکیہ کے دارالحکومت استنبول کے تقسیم اسکوائر میں دھماکے کے نتیجے میں 6 افراد ہلاک جبکہ 53 زخمی ہوگئے، تایم ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ظاہر کیا گیا ہے۔

غیرملکی خبررساں اداروں کی رپورٹس کے مطابق ترک میڈیا نے بتایا کہ دھماکا مقامی وقت کے مطابق شام 4 بجے ہوا جس میں چند افراد جاں بحق اور زخمی ہوئے ہیں۔

ترک میڈیا کے مطابق دھماکا استنبول کے تقسیم اسکوائر میں ہوا، دھماکامبینہ طورپر خود کش تھا۔دھماکےکی جگہ پر امدادی کارروائیاں جاری ہیں، دھماکے میں 5 افراد کے ہلاک ہونے اور 36 کے زخمی ہونے کی تصدیق ہوئی ہے۔

سرکاری نشریاتی ادارے ‘ٹی آرٹی’ اور دیگر چینلز میں ایمبولینس اور پولیس کی ویڈیوز دکھائی جارہی ہیں جو استبول کی استقلال اسٹریٹ پر جائے وجوع کی طرف جارہے ہیں۔

گورنر استنبول نے تصدیق کی ہے کہ دھماکے میں6 اموات ہوئی ہیں جب کہ 53 زخمی ہیں جن میں سے 11 کی حالت تشویش ناک ہے۔

دھماکےکے وقت سیاحوں کی بڑی تعداد موجود تھی اور اتوارکا روز ہونے کے باعث تقسیم اسکوائر پر سیاحوں کا رش تھا،دھماکے کے وقت کی سی سی ٹی وی ویڈیو بھی سامنے آئی ہے جس میں دیکھا جاسکتا ہے کہ جائے وقوعہ پر سیاحوں کی بڑے تعداد موجود تھی اور دھماکے کے بعد افراتفری پھیل گئی۔

ترک صدر رجب طیب اردوان نے استنبول دھماکے کی مذمت کرتے ہوئےکہا ہےکہ گھناؤنے حملےکے ذمہ داروں کو تلاش کیا جا رہاہے۔

دوسری جانب پاکستان کے صدر عارف علوی ، وزیر اعظم شہبا شریف اور پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان ترکیہ میں ہونیوالی دہشتگردی کی مذمت کی ہے.

وزیراعظم شہباز شریف نے ایک بیان میں کہا ہےکہ ترکیہ کی استقلال اسٹریٹ میں دھماکےکی شدید مذمت کرتے ہیں، استنبول میں قیمتی انسانی جانوں کے ضیاع پر بے حد افسوس ہے، بچوں سمیت واقعےمیں زخمی افرادکی جلد صحت یابی کی دعا کرتے ہیں، پاکستان ترکیہ کے عوام اور حکومت سے مکمل یکجہتی کا اظہار کرتا ہے۔

Related Articles

Back to top button