ٰISI نے آرمی چیف کو PTI کی جیت کا پہلے بتا دیا تھا


معروف صحافی اور تجزیہ کار اسد علی طور نے دعوی کیا ہے کہ آئی ایس آئی نے پنجاب کے ضمنی الیکشن میں تحریک انصاف کی جیت بارے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کو پہلے ہی بتا دیا تھا۔ اسد طور کا کہنا ہے کہ آئی ایس آئی نے آرمی چیف کو الیکشن سے پہلے ہی رپورٹ دے دی تھی کہ 17 جولائی کو پنجاب کے ضمنی انتخابات میں تحریک انصاف 15 سے 16 سیٹیں جیت جائے گی۔ اپنے وی لاگ میں اسد طور نے کہا کہ آئی ایس آئی کی جانب سے یہ انتخابی سروے اتحادی جماعتوں کی قیادت کو پیش کرتے ہوئے کہا گیا تھا کہ ہاتھ پائوں مار لیں کیونکہ پنجاب کے ضمنی الیکشن میں آپ کے ہاتھ صرف 4 سے 5 سیٹیں آنی ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ مسلم لیگ ن کے ایک انتہائی سینئر رہنما نے ضمنی انتخابات میں شکست پر تجزیہ کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے اسٹیبلشمنٹ کیخلاف جو بویا تھا، وہ پی ٹی آئی نے کاٹ کر کھا لیا لیکن دوسری جانب عمران نے ملک کو جس گہری معاشی دلدل میں دھکیلا، اس میں ہم گھٹنوں گھٹنوں دھنس چکے ہیں۔

اسد طور نے کہا کہ پنجاب کی 20 نشستوں پر ہونے والے ضمنی الیکشن کی انتخابی مہم کے دوران پی ٹی آئی کے پاس امریکی سازش، فوجی اسٹیبلشمنٹ کی مخالفت، مہنگائی، امپورٹڈ حکومت، لوٹا کریسی اور اپنی سیاسی شہادت کے بیانیے تھے جن کو عمران خان نے خوب اچھی طرح کھیلا جبکہ دوسری جانب شہباز شریف حکومت کے پاس اس کو کائونٹر کرنے کیلئے پنکی گوگی کی کرپشن کے علاوہ کوئی چیز نہیں تھی۔ انہوں نے کہا کہ ضمنی الیکشن ہارنے کے باوجود مسلم لیگ ن کی کوشش ہے کہ کسی طرح اپنی پنجاب حکومت کو بچا لیا جائے کیونکہ اگر ایسا نہ کیا گیا تو یہ صوبہ وفاق پر حملہ آور ہونے کیلئے عمران کا لانچنگ پیڈ بن جائے گا۔ اسد نے کہا کہ جس عمران خان اور پرویز الٰہی نے حمزہ کے وزیراعلیٰ ہوتے ہوئے پنجاب کو نہیں چلنے دیا وہ پنجاب میں اقتدار میں آگئے تو وفاقی حکومت کو کیسے چلنے دیں گے؟

اپنے وی لاگ میں اسد طور کا کہنا تھا کہ حکومتی اتحادی جماعتوں نے فیصلہ کیا ہے کہ جتنا ہو سکے عام انتخابات کو آگے کیا جائے تاکہ نومبر میں نئے آرمی چیف کی تعیناتی کا عمل بھی مکمل ہو سکے اور وقت بھی مل جائے تاکہ عمران کے بیانیے کو کائونٹر کیا جا سکے، لیکن اب سے اہم سوال یہ ہے کہ کیا ایسا ہونا ممکن ہے؟ انہوں نے اپنے ذرائع کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ضمنی الیکشن میں شکست کا سارا ملبہ اب وزیر اعظم شہباز شریف اور ان کے ساتھیوں پر ڈالا جا رہا ہے اور کہا جا رہا ہے کہ انہوں نے اپنے غلط فیصلوں کی وجہ سے تمام حلقوں سے مسلم لیگ ن کو فارغ کروا دیا۔ ان کا کہنا تھا کہ خبریں ہیں کہ تحریک انصاف کے اراکین کو پیکج آفر کئے جا رہے ہیں کہ اپنی فیملیوں کو لے کر بیرون ملک چھٹیوں پر چلے جائیں لیکن 22 جولائی کو ووٹ نہ دیں۔ تاہم اس سٹریٹجی پر عمل ہو پاتا ہے یا نہیں، یہ دیکھنا ابھی باقی ہے۔

Related Articles

Back to top button