پاکستان تحریک انصاف کے لانگ مارچ کا لالہ موسیٰ سے آغاز

پی ٹی آئی کا لانگ مارچ لالہ موسیٰ میں پڑائو کے بعد دوبارہ منزل کی طرف رواں دواں ہو گیا ہے، جبکہ ضلع جھنگ سے مارچ کی قیادت سیکریٹری جنرل اسد عمر کر رہے ہیں۔وزیرِ اعلٰی پنجاب چوہدری پرویز الہٰی اور حکومتِ پنجاب کی ترجمان مسرت جمشید چیمہ نے ٹویٹ کیا کہ گزشتہ روز لالہ موسیٰ میں آخری پڑاؤ تھا اور وہیں سے دوبارہ آغاز ہوگا، پی ٹی آئی کے سیکریٹری جنرل اسد عمر کی قیادت میں جھنگ سے مارچ کیا جا رہا ہے۔

مسرت چیمہ کے مطابق مرکزی لیڈرشپ کی قیادت میں ملک کے مختلف علاقوں سے قافلے نکل رہے ہیں اور اب ایک ساتھ راولپنڈی پہنچیں گے، دوسری جانب پی ٹی آئی کے ٹوئٹر اکاؤنٹ پر بھی اسد عمر کی تصاویر شیئر کی گئی ہیں کہ وہ مارچ کی قیادت کرنے ضلع جھنگ پہنچ گئے ہیں جہاں انہوں نے سلطان باہو کے مزار پر بھی حاضری دی۔

خیال رہے کہ جمعرات کو پاکستان تحریک انصاف کے لانگ مارچ کا دوبارہ آغاز ہوا تھا، مارچ اسی جگہ سے شروع کیا گیا جہاں تین نومبر کو وزیر آباد میں کنٹینر کے شرکا پر فائرنگ کی گئی تھی، لانگ مارچ پارٹی کے وائس چیئرمین شاہ محمود قریشی کی قیادت میں شروع ہوا تھا جبکہ پنجاب سے تحریک انصاف کے وزرا اور دیگر قیادت بھی کنٹینر پر موجود تھے۔

مارچ کی حکمت عملی میں تبدیلی کرتے ہوئے تحریک انصاف نے ٹوبہ ٹیک سنگھ سے بھی مارچ کا اعلان کیا تھا، اسد عمر ٹوبہ ٹیک سنگھ سے لانگ مارچ کے قافلے کی قیادت کرتے ہوئے آج جھنگ پہنچے ہیں، اس کے بعد قافلہ فیصل آباد، جڑانوالہ، چنیوٹ اور دیگر شہروں سے ہوتا ہوا راولپنڈی پہنچے گا۔

جبکہ وزیرآباد سے شروع ہونے والا لانگ ما رچ اپنے مقرر کردہ روٹ سے ہوتا ہوا راولپنڈی پہنچے گا، حملے کے بعد کنٹینر پر بلٹ پروف شیشے لگا دیے گئے ہیں جبکہ عمران خان کے خطاب کے لیے ویڈیو سکرین کا بھی اہتمام کیا گیا ہے۔وزیراعلٰی پنجاب نے مارچ کے شرکا کی سخت سکیورٹی کی ہدایت کر رکھی ہے، وزیراعلٰی آفس سے جاری ایک بیان میں کہا گیا تھا کہ ’لانگ مارچ کے شرکا کو وزیرآباد سے راولپنڈی تک ہر شہر میں مکمل سکیورٹی فراہم کی جائے۔

اس کے علاوہ لانگ مارچ کے روٹ میں آنے والی عمارتوں کی چھتوں پر سنائپرز تعینات کیے گئے ہیں، وزیرآباد سے راولپنڈی تک لانگ مارچ کے روٹ پر 15 ہزار پولیس اہلکار بھی تعینات کیے جائیں گے۔

Related Articles

Back to top button