حکومت سے مذاکرات ناکام ، ٹی ایل پی کی لانگ مارچ کی تیاریاں

حکومت سے مذاکرات ناکام ہونے کے بعد کالعدم ٹی ایل پی نے اسلام آباد کی طرف لانگ مارچ کی تیاریاں شروع کر دی ہیں۔

تحریک لبیک پاکستان کے مرکزی ترجمان سجاد سیفی نے بتایا کہ حکومت نے ہمارے مطالبات تسلیم نہیں کیے جس کے بعد ہم نے اسلام آباد کی جانب لانگ مارچ کا فیصلہ کیا ہے ، پولیس اور انتظامیہ کی جانب سے جمعہ کی صبح مری روڈ پر سکستھ روڈ، شمس آباد اور فیض آباد کے مقامات پر کنٹینر لگا کر راستے بند کر دیئے گئے ہیں۔راولپنڈی ، اسلام آباد میں چلنے والی میٹرو بس سروس کو تاحکم ثانی بند کر دیا گیا ہے ، راستوں کی بندش سے کئی جگہوں پر ٹریفک جام کے مسائل پیدا ہوگئے ہیں‌ جس سے مسافروں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

سینیٹر اعجاز چودھری نے کالعدم تحریک لبیک پاکستان سے مذاکرات کی تصدیق کرتے کہا کہ اس کی تفصیلات میڈیا کو تھوڑی دیر میں دی جائیں گی ، کالعدم تحریک لبیک پاکستان کی شوریٰ کے رکن مفتی وزیر احمد رضوی نے بتایا تھا کہ جمعرات کی رات صوبائی حکومت اور مرکزی حکومت کی جانب سے ان کی جماعت سے رابطہ کیا گیا تھا تاہم بات چیت تاحال آگے نہیں بڑھ سکی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ صوبائی حکومت کی جانب سے بتایا گیا کہ کارکنان کی رہائی، کیسز کا اخراج اور جماعت کے قائد سعد حسین رضوی کی رہائی پر وہ بات چیت کرسکتے ہیں تاہم تحریک لبیک پاکستان کی کالعدمی کو واپس لینا مرکزی حکومت کے دائرہ اختیار میں آتا ہے۔

لاہور ٹریفک پولیس نے شہریوں کو غیر ضروری سفر اور خاص طور پر شہر کے وسطی علاقوں میں سفر سے اجتناب کی ہدایات جاری کر رکھی ہیں جبکہ بندش کے باعث متبادل روٹ بھی جاری کیے ہیں۔ رات گئے شہر کی سکیورٹی کی صورت حال کے حوالے سے پولیس کا اعلیٰ سطحی اجلاس ہوا جس میں لاہور پولیس کے سربراہ غلام محمود ڈوگر نے پولیس کو کسی بھی ’ناگہانی صورت حال‘ کے لیے تیار رہنے کے احکامات جاری کیے ہیں۔

اجلاس میں امن و امان کی مجموعی صورت حال کا جائزہ لیا گیا اور سی سی پی او لاہور نے ہدایات دیں کہ شہر کا امن کسی صورت متاثر نہیں ہونے دیا جائے گا ، ضلعی حکومت نے اورنج میٹرو سروس بھی جمعرات سے بند کر رکھی ہے جبکہ میٹرو بس سروس کے روٹ کو گجومتہ سے ایم اے او کالج تک محددود کر دیا ہے۔ لاہور کے داخلی اور خارجی راستوں پر بھی پولیس کی بھاری نفری تعینات کردی گئی ہے۔

بشکریہ اردو نیوز

Related Articles

Back to top button