فرح گوگی اورشوہر کی 11 خفیہ کمپنیاں سامنے آ گئیں


سابق وزیراعظم عمران خان کی اہلیہ بشریٰ بی بی کی فرنٹ پرسن کہلانے والی فرح خان عرف گوگی کیخلاف کرپشن کیسز کی تحقیقات کے دوران مزید ہوشربا انکشافات سامنے آئے ہیں جن میں ان کی ملکیتی 11 کمپنیاں بھی شامل ہیں جو ایک ارب روپے سے زائد مالیت کا بزنس کر رہی ہیں۔ نیب نے فرح گوگی کے معلوم اور نا معلوم اثاثوں کی تفصیلات چار اداروں سے حاصل کی ہیں جن میں اسلام آباد انتظامیہ، پنجاب ریوینو اتھارٹی، ایف بی آر اور سیکیورٹی ایکسچینج کمیشن آف پاکستان شامل ہیں۔ یاد رہے کہ عمران خان حکومت کا خاتمہ ہوتے ہی فرح گوگی اور ان کے شوہر احسن جمیل گجر ملک سے فرار ہو گئے تھے۔

سیکیورٹی ایکسچینج کمیشن آف پاکستان نے نیب کو فرح اور اسکے شوہر کی جن 11 کمپنیوں کی تفصیلات مہیا کی ہیں ان میں فرح گوگی کی والدہ بشریٰ خان اور شوہر احسن جمیل گجر کی کمپنیاں بھی شامل ہیں۔ زيادہ تر کمپنياں پچھلے چار سال کے دوران بنائی گئی تھیں جب ہر جانب سے پیسوں کی بارش ہو رہی تھی۔ نیب کی تحقیقات کے مطابق فرح گوگی اور احسن جمیل گجر کی جو گیارہ کمپنیاں سامنے آئی ہیں ان کے دیگر شراکت داروں میں حميرا باجوہ، عرفان ملک، نذر مرشد اور فردوس اقبال بھی شامل ہیں۔ ان کمپنيوں کا کاروباری حجم ایک ارب روپے سے زيادہ بتايا گیا ہے تاہم احسن جمیل گجر اس سے انکاری ہیں۔ تاہم انہوں نے تصدیق کی یے کہ وہ اور انکے اہلخانہ ان کمپنيوں کےعہدیدار ہيں۔

نیب کی تحقیقات کے مطابق احسن جمیل 2003 میں قائم کی جانی والی غوثیہ بلڈرز لمیٹڈ کے چیف ایگزیکٹو آفیسر ہیں۔ اسی طرح اے اینڈ ای پرائیویٹ لمیٹڈ بھی احسن جمیل کی ملکیت ہے۔اپریل 2018 میں ڈاکٹرز کلینیکل کیئر پرائیویٹ لمیٹڈ کا قیام عمل میں لایا گیا جو احسن اقبال جمیل اور مسز فردوس اقبال کی ملکیت ہے۔

احسان اقبال جمیل، فرح خان، حمیرہ رحمان باجوہ، عرفان احمد ملک، مظاہر بیگ اور نذر شاد مشترکہ طور پر سینیٹوریا ہسپتال مینجمنٹ کپمنی پرائیویٹ لمیٹڈ کے مالک ہیں۔ یہ کمپنی اکتوبر 2020 میں قائم ہوئی۔ مئی 2018 میں دیان ڈیویلپرز پرائیویٹ لمیٹڈ کا قیام عمل میں لایا گیا۔ اس کے چیف ایگزیکٹو آفیسر سلیم احمد جب کہ فرح گوگی اس کی ڈائریکٹر ہیں۔ دیان ڈیولپرز آف لائن طرز پر کام کر رہا ہے۔

نیب کی تحقیقات کے مطابق احسن جمیل اور فرح گوگی کی ملکیتی دیگر کمپنیوں میں المعيز ڈيری اور البراق بھی شامل ہیں۔ دستاویزات کے مطابق المعیز ڈیری اینڈ فوڈ پرائیویٹ لمیٹڈ اکتوبر 2021 میں بنائی گئی تھی، اس کی ڈائریکٹرز فرح خان اور انکی والدہ بشریٰ خان ہیں۔ اسی طرح بشریٰ اور فرح خان کی مشترکہ ملکیت البراق ہائوسنگ پرائیویٹ لمیٹڈ کا قیام 2016 میں عمل میں لایا گیا۔

فرح خان کے شوہر احسن جمیل گجر کا کہنا ہے کہ نیب جن کمپنیوں کی تحقیقات کر رہا ہے ان میں سے کچھ ہمارے نام پر تھیں، جبکہ کچھ میں ہم پارٹنرز تھے، لیکن ہم نے کوئی غیرقانونی کام نہیں کیا۔ انکا کہنا تھا کہ ہماری تمام جائیدادیں بھی ظاہر کی گئی ہیں۔ ہماری ملکیتی کمپنیوں میں سے کسی ايک کمپنی نے بھی ایک ارب روپے کا کاروبار نہيں کيا۔ تمام کمپنياں کاروبار کے ابتدائی مراحل ميں ہيں اور ان کا قیام پچھلے کچھ برسوں میں عمل میں آیا تھا۔

جب فرح خان کے شوہر احسن جمیل گجر سے ان کے پارٹنر مظاہر کی نیب طلبی کے بارے میں پوچھا گیا تو انہوں نے کہا کہ مجھے اس حوالے سے کچھ علم نہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے خاندان نے ايمنسٹی سکیم سے جو بھی فائدہ اٹھایا تھا اس کی تفصيلات ياد نہیں ہیں۔

Related Articles

Back to top button