شہباز گل کی گرفتاری عمران خان کے لئے بھی ایک وارننگ

تحریک انصاف کے زبان درازسربراہ عمران خان کے بدزبان چیف آف اسٹاف شہباز گل کی گرفتاری کو عمران خان کے لئے بھی اداروں کی جانب سے ایک سخت پیغام قرار دیا جا رہا ہے جن کا سوشل میڈیا بریگیڈ افواج پاکستان کے خلاف زہریلا پروپیگنڈا کرتے ہوئے ریڈ لائن بھی کراس کر گیا تھا۔ شہباز گل پر الزام عائد کیا گیا ہے کہ انہوں نے اے آر وائے نیوز چینل پر ایک پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے نفرت انگیز اور فتنہ آمیز گفتگو کی اور جوانوں کو فوج کے اندر بغاوت پر اکسانے کی کوشش کی۔ اس گفتگو کی وجہ سے پیمرا پہلے ہی قانونی کارروائی کرتے ہوئے ملک بھر میں اے آر وائے کی نشریات معطل کروا چکا ہے اور نیوز چینل کو پیمرا قانون کی دفعہ 29، 30 کے تحت جرمانہ، معطلی اور لائسنس کی منسوخی کا سامنا بھی کرنا پڑ سکتا ہے۔ شہباز گل کے خلاف پاک فوج میں بغاوت پھیلانے کی کوشش کے الزام میں اسلام آباد کے تھانہ بنی گالہ میں پرچہ درج کیا گیا ہے۔

یاد رہے کہ شہباز گل زیادہ بد زبانی کرکے عمران کی قربت حاصل کرنے کی کوشش کرتے ہیں جن کی نظر میں زبان درازی ہی سب سے بڑا میرٹ ہے۔ شہباز گل نے اے آر وائے پر بھی گفتگو کرتے ہوئے بد زبانی کی حدیں کراس کیں اور کہا کہ فوج کے جوان اپنے افسروں کا حکم ماننے سے انکار کر دیں۔انہوں نے کہا کہ آپ کو اگر کچھ غلط کرنے کا حکم ملتا ہے تو آپ کے پاس اپنا ضمیر بھی تو ہے، اپنی اقدار بھی ہیں، آپ نے امر بالمعروف بھی پڑھا ہوا ہے، آپ کو نیکی اور بدی کی پہچان ہے، آپ نبیؐ کے امتی بھی ہیں، آپ قائداعظم کے بنائے ہوئے پاکستان کے شہری بھی ہیں اور سب سے بڑھ کریہ کہ آپ فوجی بعد میں ہیں اور پاکستانی پہلے ہیں ۔آپ کو اگر کوئی غلط حکم ملا ہے تو آپ نہ تو اندھے ہیں اور نہ ہی پاگل یا جانور ہیں کہ آنکھیں بند کر کے اس پر عمل کریں۔ لہذا موصوف کی اس گفتگو کو فوج میں بغاوت پر اکسانے کے مترادف قرار دیا گیا ہے۔

شہباز گل کی نفرت انگیز گفتگو کو بنیاد بنا کر پیمرا نے جو شو کاز نوٹس جاری کیا ہے اس میں کہا گیا ہے کہ ’اے آر وائی کی اینکر صدف عبدالجبار نے 27 جون کو نشر ہونے والی ایک خبر کو بریکنگ نیوز کے طور پر پیش کیا اور الزام لگایا کہ حکومت کا ایک سٹریٹجک میڈیا سیل فوج کے خلاف مہم چلا کر عمران خان کو بدنام کر رہا ہے۔ شوکاز نوٹس کے مطابق ’اس پروگرام میں شہباز گل نے نفرت انگیزی اور فتنہ انگیزی پر مبنی تبصرے کیے جو فوج کے اندر بغاوت پر اکسانے کے مترادف تھے۔

پیمرا کے شوکاز نوٹس کے مطابق شہباز گل نے نہ صرف وفاقی حکومت کو بدنام کرنے کی کوشش کی بلکہ حکومتی اہلکاروں پر بھی الزام عائد کیا کہ وہ فوج کے بیانیے کی ترویج کے ذریعے عمران کے خلاف سوشل میڈیا پر مہم چلا رہے ہیں۔‘

اسلام آباد کے بنی گالا تھانے میں درج مقدمے میں بھی انہی الزامات کو دہرایا گیا ہے جو کہ پیمرا کے شوکاز نوٹس میں لگائے گئے ہیں۔ ایف آئی آر میں شہباز گل کے بیان کو انتہائی قابل اعتراض، نفرت انگیز، فتنہ انگیز، مکمل غلط معلومات پر مبنی قرار دیتے ہوئے مسلح افواج کے اندر بغاوت کو ہوا دے کر قومی سلامتی کو خطرے میں ڈالنے کے مترادف قرار دیا ہے۔

افغانستان میں زلزلے سے تباہی، 130 افراد ہلاک

یاد رہے کہ گرفتاری سے پہلے شہباز گل کو احساس ہو چکا تھا کہ اس نے کیا بلنڈر مارا ہے لہذا اس نے ایک بھونڈی وضاحت دینے کی کوشش بھی کی۔ موصوف نے کہا کہ انہوں نے فوجوں کو نہیں بلکہ سویلین بیوروکریسی کو غیرقانونی احکامات نہ ماننے کی ترغیب دی تھی۔ لیکن سینئر صحافی مطیع اللہ جان کہ کہنا ہے کہ شہباز گل کے الفاظ کا تسلسل اور بیان کا بہاؤ اور پھر فون پر یہ سب کہنا اس بات کا اشارہ ہے کہ وہ کچھ اور لوگوں کے ساتھ بیٹھ کر تحریر شدہ نکات پڑھ رہے تھے۔

شہباز گل کی گرفتاری کے فوری بعد ان کی اپنی ایک ویڈیو وائرل ہوگئی جس میں موصوف باولے کتوں کو پٹا ڈالنے کا مشورہ دے رہے ہیں۔ لہٰذا اب انکی گرفتاری پر سوشل میڈیا صارفین باولے کتوں کو پکڑ کر پنجروں میں بند کرنے کی ویڈیوز پوسٹ کر رہے ہیں۔

Related Articles

Back to top button