’’برطانوی شہزادی کیٹ مڈلٹن نے خوبصورتی کا راز بتا دیا‘‘

ہم اکثر معروف شخصیات، فلمی ستاروں کو ہمیشہ جوان دیکھتے ہیں، 40 سے 50 برس کی عمر کو پہنچنے کے بعد بھی ان کی ظاہری شکل و صورت میں کوئی واضح تبدیلی محسوس نہیں ہوتی، اس کی بنیادی وجہ ان کی روزمرہ کی عادتیں ہوتی ہیں۔اس کے برعکس ہم اکثر ایسی خواتین کو دیکھتے ہیں جو 25 سال کی ہونے کے باوجود 30 یا 35 برس کی محسوس ہوتی ہیں، اس کی وجہ وہ عادتیں ہیں جن سے لاعلمی ہمیں تیزی سے بڑھاپے کی جانب راغب کر رہی ہوتی ہیں، جواں عمر نظر آنے کیلئے دنیا بھر میں ارب پتی افراد مختلف جتن کرتے ہیں مگر چند عام عادات کو ترک کر دینا بڑھتی عمر کے اثرات کو ظاہر ہونے سے روکنے میں مددگار ثابت ہوتا ہے۔انگلینڈ کی مستقبل کی ملکہ، لیڈی ڈیانا کی بہو کیٹ مڈلٹن بھی خوبصورت نظر آنے کے لیے چند ہی آسان طریقے استعمال کرتی ہیں، انہوں نے پہلی بار اپنی خوبصورتی اور جلد کی دیکھ بھال کے کچھ رازوں سے پردہ اٹھایا ہے، مستقبل کی ملکہ برطانیہ کیٹ مڈلٹن جلد کی دیکھ بھال کے قدرتی طریقے استعمال کرتی ہیں اور قدرتی گلاب کا تیل استعمال کرتی ہیں، جو ان کے چہرے کی جلد کو ہموار، نرم اور مخملی بناتا ہے۔اچھی جلد کا تعلق اچھی خوراک سے ہوتا ہے، کیٹ مڈلٹن کی خوبصورتی کے راز ان کی متوازن غذا میں پوشیدہ ہے، وہ بادام کھاتی ہیں، اس کے علاوہ زنک اور وٹامن ای سے بھرپور غذائیں کھاتی ہیں، گلائکولک ایسڈ جلد کو صاف اور چہرے پر قدرتی نکھار لاتا ہے، اس لیے کیٹ مڈلٹن گلائکولک ایسڈ بھی چہرے کے نکھار کے لیے استعمال کرتی ہیں۔کیٹ مڈلٹن موئسچرائزر باقاعدگی سے استعمال کرتی ہیں، پانی اور جوس کا استعمال زیادہ کرتی ہیں، اس سے چہرے پر آلودگی کے اثرات زائل ہوتے ہیں اور موئسچرائزر کا استعمال ان کے چہرے کی جلد کو نرم رکھتا ہے۔کام کا مصروف شیڈول نیند کے دورانیے کو متاثر کر سکتا ہے ، اس لیے مڈلٹن اپنی نیند کا خاص خیال رکھتی ہیں اور کم از کم 6 گھنٹے پرسکون نیند لیتی ہیں۔کیٹ مڈلٹن قدرتی اسکن کیئر آئل استعمال کرتی ہیں جو چہرے کی جلد پر سیاہ حلقوں کو دور کرتی ہے اور عمر بڑھنے کی ابتدائی علامات کو بھی کم کرتی ہے، کیٹ مڈلٹن 8 گھنٹے تک اسکن پروٹیکٹنٹ کریم استعمال کرتی ہیں جوکہ ایک ملٹی ٹاسکر ہے، یہ چہرے پر نمی برقرار رکھتی ہے، پاؤں کی ایڑیوں کو صاف رکھتی ہے اور خشکی دور کرتی ہے، کیٹ مڈلٹن ہلکا میک اپ کرتی ہیں اور ان کے پاس ہلکے وزن کا میک اپ باکس ہمیشہ موجود ہوتا ہے، جس میں زیادہ تر موئسچرائزر بیس ہوتا ہے۔

Related Articles

Back to top button