دسمبر میں پاکستانیوں کی شاعری کیوں اُمڈ آتی ہے؟

سال کے اختتامی مہینے دسمبر میں جہاں دن چھوٹے اور راتیں لمبی ہوتی ہیں وہیں لوگوں کے چہروں پر اداسی ماحولیاتی کیفیت آشکار کرتی دکھائی دیتی ہے، لیکن اس دوران پاکستانیوں کی بڑی تعداد اپنے تاثرات کو شاعری میں ڈھالتی دکھائی دیتی ہے، سوشل میڈیا پر شعروں کے انبار لگ جاتے ہیں لیکن زیادہ تر اشعار غلط العام اور مفہوم سے عاری ہوتے ہیں۔پاکستانی دسمبر کو اس انداز میں مناتے ہیں کہ ’شعر و شاعری‘ کی مت ہی مار دیتے ہیں، ماہ دسمبر کے آغاز سے پہلے ہی ’دسمبر کی شاعری‘ سوشل میڈیا کو سموگ کی طرح اپنی لپیٹ میں لے لیتی ہے اور پھراس شاعری کے سوا کہیں کچھ دکھائی اورسجھائی نہیں دیتا۔ویسے دسمبر کی ڈگڈگی نومبر ہی میں بجنا شروع ہو جاتی ہے، نومبر کے مہینے میں ہی یار دوست سوشل میڈیا پر آوازیں کسنے لگتے ہیں کہ تیار ہو جاﺅ! دسمبر آ رہا ہے اور پھر دسمبر آ جاتا ہے، ایسے میں فیس بُک ہو یا ایکس، ٹک ٹاک ہو یا اسنیپ چیٹ یا پھر ہو واٹس ایپ اسٹیٹس ہر جگہ آپ کو صرف دسمبر سے متعلق شاعری ہی نظر آتی ہے۔جیسے ہی رات کے 12 بجتے ہیں اور یکم دسمبر شروع ہوتا ہے، یوں لگتا ہے جیسے تہوار کا باقاعدہ آغاز ہو گیا ہو۔ سوشل میڈیا پر ایک ہی جملہ دکھائی دینے لگتا ہے، اسے کہنا دسمبر آ گیا ہے، دسمبر کے ٹھنڈے ماحول میں موسمی شاعروں کی جانب سے بھی ایسے شعر و شاعری کی برسات شروع ہو جاتی ہے کہ اصلی شاعروں کی جاندار شاعری پر برف جم جاتی ہے، سماجی رابطے کی ویب سائٹ ’’ایکس‘‘ پر ایک صارف نے اپنی طرف سے شام کا منظر کیمرے کی آنکھ سے محفوظ کیا، اور چند سیکنڈ کی ویڈیو ’غمگین بیک گراؤنڈ موسیقی‘ کے ساتھ پوسٹ کرتے ہوئے یہ شعر لکھا کہ
کل کریں گے تم پر شاعری اے دسمبر۔
نومبر کی آج آخری رات ہے
اسما صہیب نامی ایکس صارف نے دسمبر میں پیدا ہونے والی صورتحال سے متعلق ایک مزاحیہ ویڈیو پوسٹ کی، ساتھ لکھا کہ ’ اب مجھے دسمبر ،نومبر کی شاعری اور اداسی کا راز معلوم ہوگیا ہے کہ دونوں فریقوں کو ایک دوسرے کے جذبات سمجھ میں نہیں آ پاتے جو بعد میں اتنے سنگین نتائج برآمد ہوتے ہیں۔ارم چوہدری نے بھی ایک مزاحیہ نظم اپنے ایکس اکاؤنٹ پر شیئر کر دی، ایک اور ایکس صارف نے اپنے شعر میں محبوب سے دسمبر کے اختتام پر نئے سال کا کیلینڈر مانگ لیا، خاتون صحافی ثنا ارشد نے ایکس پر اپنی پوسٹ میں سردیوں کی مقبول ترین ڈرائی فروٹ مونگ پھلی کا ذکر چھیڑ دیا، ایک اور ایکس صارف نے اپنی پوسٹ میں دسمبر کے مہینے کو 3 عشروں میں تقسیم کردیا، ایک صارف نے اپنی پوسٹ میں لکھے گئے شعر کو جون ایلیا سے منسوب کر دیا، نمبردار نامی ایکس صارف نے اپنی ذات کو ہی شاعری قرار دے دیا۔یہ فطری بات ہے کہ نئے سال کے آغاز پر دکھ بھی یاد آتے ہیں اور بیتے ہوئے سال کی یادیں بھی ہمیں اپنے حصار میں لیے رکھتی ہیں لیکن دسمبر میں آخر ایسی کون سی بات ہے کہ اسے شاعری کا موضوع بنایا

فضائی آلودگی میں لاہور دنیا کے5ویں نمبرپرآگیا

جائے یہ فیصلہ ہم آپ پر چھوڑتے ہیں۔

Related Articles

Back to top button