سندھ کے بروقت اقدامات سے ووہان، نیویارک اور اٹلی بننے سے بچ گئے

چئیرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری کا کہنا ہے کہ سندھ حکومت کے بروقت اقدامات سے پاکستان ووہان، اٹلی اور نیویارک بننے سے بچ گیا۔
چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے ایک اہم اجلاس کے شرکاء سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان پیپلزپارٹی کی سندھ حکومت صرف ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کی جانب سے دی گئی گائیڈ لائن پر کام کر رہی ہے، یہی وجہ ہے کہ سندھ حکومت کے بروقت اقدامات سے پاکستان ووہان، اٹلی اور نیویارک بننے سے بچ گیا۔ سہولیات کی عدم دستیابی کے حوالے سے بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ وفاقی حکومت نے ڈاکٹرز، نرسز اور پیرا میڈیکل اسٹاف کو کوئی سہولیات فراہم نہیں کیں، وفاقی حکومت کی یہ ذمے داری ہے کہ وہ تمام صوبوں کی مدد کرے۔بلال بھٹو نے مزید کہا کہ لاک ڈاؤن سے متاثرہ روزانہ اجرت پر کام کرنے والے لوگوں کے لیے بھی وفاقی حکومت نے اب تک کچھ نہیں کیا۔چئیرمین پیپلزپارٹی نے کہا کہ ہماری اولین ترجیح عوام کی زندگی کو محفوظ بنانا ہے اور ایک سازش کے تحت ہماری خدمت کے جذبے کو سبوتاژ کرنے کی کوشش جا رہی ہے.
دوسری طرف وفاقی وزیر اطلاعات سینیٹر شبلی فراز کا ردعمل دیتے ہوئے کہنا ہے کہ کورونا پر قابو پانے کے لیے سندھ کو دی گئی وفاق کی امداد بلاول کی لاعلمی کا پول کھول رہی ہے۔وفاقی وزیر شبلی فراز وفاق نے کہا کہ سندھ کی 45 ہزار صنعتوں اور 7 لاکھ 70 ہزار کمرشل صارفین کو بجلی کے بلوں میں ریلیف دیا گیا، ساتھ ہی یوٹیلیٹی اسٹورز کا ریلیف دیگر صوبوں کی طرح سندھ کو بھی ملا۔انہوں نے کہا کہ اسٹیٹ بینک ڈیفرڈ اسکیم کا آسان قرض سندھ میں بھی فراہم کیا گیا ہے، اور ایک اعشاریہ دو کھرب کا امدادی پیکج سندھ سمیت تمام صوبوں میں تقسیم ہو گا۔
وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ اس کے علاوہ سندھ میں 27 ارب روپے احساس کیش ایمرجنسی پروگرام کے تحت تقسیم کیے، ماسک، حفاظتی سوٹ، ٹیسٹنگ کِٹس، تھرمل گنز، سینیٹائزرز و دیگر اشیاء بھی سندھ کو فراہم کیں۔شبلی فراز نے کہا کہ کورونا پر قابو پانے کے لیے سندھ کو دی گئی وفاق کی امداد بلاول کی لاعلمی کا پول کھول رہی ہے۔وزیر اطلاعات نے چیئرمین پیپلز پارٹی کو مشورہ دیا کہ بلاول خود کو سیاست میں زندہ رکھنے کے لیے قومی اتحاد اور یکجہتی کی فضا پارہ پارہ نہ کریں، اپوزیشن سیاست کی بجائے کورونا کے خلاف جنگ میں وزیراعظم کا ساتھ دے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button