عمرانڈو سواتی کو 14 روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیجنے کا حکم

فوجی قیادت کیخلاف بازیبا ٹویٹس کرنے پر دوبارہ گرفتار ( پی ٹی آئی  کے سینیٹر اعظم سواتی کو 14 روز کے لئے جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیجنے کا حکم دے دیا گیا۔

اسلام آباد کے  جوڈیشل مجسٹریٹ محمد شبیر نے وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) کی درخواست منظور کر لی۔ایف آئی اے کی جانب سے درخواست میں استدعا کی گئی کہ ہم نے تفتیش مکمل کر لی ہے مزید اعظم سواتی کی ضرورت نہیں، ریمانڈ ختم ہونے سے قبل ہی اعظم سواتی کو جوڈیشل کرنے کی درخواست دی۔

واضح رہے کہ ایف آئی اے کے پاس اعظم سواتی کا جسمانی ریمانڈ ہفتہ کے روز مکمل ہو رہا تھا، جوڈیشل مجسٹریٹ نے تین دسمبر تک 4 روزہ جسمانی ریمانڈ منظور کیا تھا۔

دوسری جانب پی ٹی آئی رہنما ڈاکٹر یاسمین راشد نے سینیٹر اعظم سواتی کی گرفتاری کے خلاف سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں درخواست جمع کرا دی۔سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں ازخود نوٹس کے لیے دائر درخواست میں ڈاکٹر یاسمین راشد نے اعظم سواتی کی گرفتاری کی تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔ درخواست میں اعظم سواتی کی گرفتاری کو غیر قانونی قرار دیتے ہوئے اس پر ازخود نوٹس لینے کی استدعا کی گئی ہے۔

ڈاکٹر یاسمین راشد  کی درخواست میں مؤقف اپنایا گیا ہے کہ اعظم سواتی کو گرفتار کر کے چادر اور چار دیواری کا تقدس پامال کیا گیا ہے، ان کی گرفتاری پر کابینہ اراکین سمیت ذمہ داروں کے خلاف کارروائی کی جائے۔

درخواست دائر کرنے کے بعد سپریم کورٹ رجسٹری کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ڈاکٹر یاسمین راشد نے کہا کہ ہم سپریم کورٹ میں ایک درخواست دائر کر رہے ہیں، چاہتے ہیں کہ سپریم کورٹ ازخود نوٹس لے کر چادر اور چار دیواری کا تحفظ کرے، پہلے آپ نے اعظم سواتی کے پوتے پوتیوں کے سامنے ان کی بے عزتی کی، ایک ایسی ویڈیو ریلیز ہوئی ہے جس نے ہم سب خواتین کا سر شرم سے جھکا دیا ہے۔

یاسمین راشد نے کہا کہ امپورٹڈ حکومت کو شرم آنی چاہیے، ہمیں چادر اور چار دیواری کا خدشہ ہے، رانا ثنا اللہ! جس طریقے سے تم نے خواتین کو زدوکوب کیا ہمارے پاس سارا ریکارڈ موجود ہے، کیا تم لوگوں کے گھر میں مائیں بہنیں نہیں رہیں، آپ نے اعظم سواتی کو پھر پکڑ کر مارا، ڈرایا اور تشدد کیا، مجھے امید ہے کہ ہمارے چیف جسٹس ازخود نوٹس لیں گے، ہم یقینی بنائیں گے کہ اسے سزا ملے۔

Related Articles

Back to top button