عمران خان کے بیانات کیخلاف قومی اسمبلی میں قرارداد پیش

سابق سپیکر قومی اسمبلی ایاز صادق نے چیئرمین پی ٹی آئی کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ سابق وزیراعظم نے نا جانے کس کس کو سیکریٹس دے دئیے ہیں جو کہتے پھر ہیں کہ پاکستان کے تین ٹکڑے ہو جائیں گے۔

قومی اسمبلی کا اجلاس سپیکر راجہ پرویز اشرف کی زیر صدارت شروع ہوا، جس میں سردار ایاز صادق سابق وزیراعظم عمران خان کا انٹرویو ایوان میں لے آئے اور کہا کہ عمران خان کا انٹرویو پڑھ کر سنانا چاہتا ہوں اور سابق وزیراعظم عمران خان کے ایٹمی پروگرام، پاکستان اور پاک فوج کے حوالے سے کہے گئے الفاظ اور انٹرویو پر مذمتی قرارداد پیش کی۔
قرارداد میں ایوان کی جانب سے چیئرمین پی ٹی آئی کے انٹرویو اور الفاظ کی شدید مذمت کی گئی اور کہا کہ سابق وزیراعظم نے کہا اسٹیبلشمنٹ نے درست فیصلے نہ کئے تو پاکستان تین ٹکڑے ہوجائیگا، پاک فوج تباہ ہوجائیگی، ایاز صادق کا قرار داد میں عمران نیازی کے بیان کی مذمت کرتے ہوئے کہنا تھا کہ پاک فوج کی دفاع کے لئے ناقابل تسخیر خدمات ہیں، پاک فوج نے دہشتگردی کے خلاف عظیم قربانیاں دیں جسے ایوان خراج تحسین پیش کرتا ہے۔

رہنما مسلم لیگ نون نے کہا کہ عمران خان کو اقتدار کی ہوس اتنی زیادہ ہے کہ اتنی بڑی باتیں کرگئے کہ نقصان پاکستان کو پہنچے گا، ریاست سابق وزیراعظم کے خلاف سپریم کورٹ سے رجوع کرے، سابق وزیراعظم اس ایٹمی پروگرام کے خاتمے کی بات کرتے ہیں جس کی بنیاد ذوالفقار علی بھٹو اور اسے پایہ تکمیل تک میاں نواز شریف نے پہنچایا۔

ان کا کہنا تھا کہ ہمیں اپنی سیاسی وابستگی اور جماعتیں عزیز مگر مذہب اسلام اور پاکستان سے زیادہ کوئی چیز عزیز نہیں، جس اقتدار کی خاطر یہ اندھے ہوگئے ہیں ایک قرارداد لائی جانی چاہییے اور ایوان میں بیٹھے ہر شخص کو اس پر دستخط کرنا چاہئے، ایاز صادق نے مزید کہا کہ میں کسی کو غیر محب وطن نہیں کہتا مگر جو دستخط نہیں کرے گا وہ عمران خان کے بیان کی تائید کرے گا۔

Related Articles

Back to top button