ننگی ویڈیو میں میرا سر کسی کے دھڑ پر لگایا گیا ہے

https://youtu.be/lyjjcoAyVNs
نام نہاد عالم دین مفتی عبدالقوی نے سوشل میڈیا پر اپنی ایک برہنہ ویڈیو وائرل ہونے کے بعد یہ بھونڈا مؤقف اختیار کیا ہے کہ دراصل ویڈیو میں نظر آنے والا شخص کوئی اور ہے جس کی گردن پر ان کا چہرہ لگا دیا گیا ہے تا کہ انہیں بدنام کیا جا سکے۔
کچھ عرصہ پہلے ٹک ٹاک کے ذریعے شہرت حاصل کرنے والی حریم شاہ اور مفتی عبدالقوی کی غیر اخلاقی ویڈیوز نے انٹرنیٹ ہنگامہ برپا کر دیا تھا لیکن اب رنگیلے مفتی قوی کی اخلاقیات سے گری ہوئی ایسی ویڈیو سوشل میڈیا پر گردش کر رہی ہے کہ دیکھ کر انسان توبہ توبہ کرنے لگے. یاد رہے کہ حریم شاہ کی جانب سے تھپڑ پڑنے کی ویڈیو سامنے آنے کے بعد مفتی قوی منظر عام سے غائب تھے اور میڈیا پر آنے سے گریزاں تھے۔ تاہم اب وہ خود تو میڈیا پر نہیں آئے لیکن ان کی ایک انتہائی شرمناک ویڈیو لیک ہو کر سوشل میڈیا پر چھا گئی ہے۔ اس ویڈیو میں مفتی ویڈیو کال پر کسی لڑکی کے ساتھ مکمل برہنہ حالت میں موجود ہیں اور مسلسل خود لذتی میں مشغول ہیں۔ یہ ویڈیو بنانے کے لیے بہت چالاکی سے کام لیا گیا ہے، مفتی قوی جس خاتون کے ساتھ ویڈیو کال پر بات کر رہے ہیں اس نے اپنے کیمرے کو بند کرتے ہوئے مفتی قوی کی تمام آوازوں کو مکمل ریکارڈ کیا اور ریکارڈنگ کے بعد جب ویڈیو لیک کی گئی تو اس کی آواز بھی ایڈٹ کرتے ہوئے بند کر دی گئی تاکہ معلوم نہ ہو سکے کہ وہ کس لرکی کے ساتھ گفتگو میں مصروف ہیں۔
یاد رہے کہ مفتی عبدالقوی کی اس سے قبل بھی غیر اخلاقی گفتگو پر مبنی ویڈیو کالز لیک ہو چکی ہیں جس میں وہ حریم شاہ کے ساتھ موجود ہیں، لیکن ابھی تک یہ معلوم نہیں ہو سکا ہے کہ تازہ لیک ہونے والی ویڈیو میں مفتی قوی کے ساتھ کون ہے۔ دوسری جانب اپنی ننگی ویڈیو وائرل ہونے کے معاملے پر مفتی قوی نے یہ جھوٹ گھڑا ہے کہ جو ویڈیو مجھ سے منسوب کی جارہی ہے اس میں میرا چہرہ لگا کر کسی اور کا جسم جوڑا گیا ہے تاکہ مجھے بدنام کر کے شہرت اور پیسہ کمایا جاسکے۔ یاد رہے کہ مفتی عبدالقوی کی متنازع ویڈیوز وائرل ہونے کا یہ پہلا واقعہ نہیں ہے۔ مقتول ماڈل قندیل بلوچ کے ساتھ سیلفیوں سے خبروں میں آنے والے مفتی قوی کی ٹک ٹاک سٹار حریم شاہ کے ساتھ بھی کئی ویڈیوز وائرل ہوچکی ہیں، جب حریم شاہ کی جانب سے مفتی قوی کو تھپڑ مارنے کی ویڈیو منظر عام پر آئی تو آٹھ ماہ پہلے قوی کے خاندان نے ان سے مفتی کا ٹائٹل واپس لے کر انہیں گھر میں بند کردیا تھا۔ لیکن اب سوشل میڈیا پر ان کی ایک ننگی ویڈیو نے پھر سے تہلکہ مچا دیا ہے۔ جب اس سلسلے میں مفتی عبدالقوی سے رابطہ کیا تو انہوں نے بتایا کہ ’جس طرح مفتی عزیز الرحمٰن کے ساتھ ایک لڑکے کی ویڈیو بنا کر انہیں بدنام کیا گیا، اسی طرح ان کی جعلی ویڈیو بنا کر وائرل کی جارہی ہے۔ یہ وہی لوگ ہیں جو جھوٹی باتیں پھیلا کر ویڈیوز وائرل ہونے سے یوٹیوب کے ذریعے پیسے کماتے ہیں۔‘
واضح رہے کہ گذشتہ ہفتے لاہور کے ایک مدرسے میں مفتی عزیز الرحمٰن کی ایک طالب علم سے بد فعلی کی ویڈیو وائرل ہوئی تھی، جس پر پولیس نے تفتیش کے بعد مقدمہ درج کر کے انہیں دو بیٹوں سمیت گرفتار کرلیا ہے۔
مفتی قوی نے مزید بتایا: ’گھر والوں نے مجھ سے اینڈرائیڈ فون لے رکھا ہے جبکہ میرے پاس تو 25 سو روپے والا بغیر کیمرے کے سادہ سا فون ہے۔ میں اس سے ویڈیو کال کیسے کرسکتا ہوں؟‘ انہوں نے کہا: ’جو وائرل ویڈیو مجھ سے منسوب کی جارہی ہے اس میں نظر آنے والی جسامت میری نہیں، کسی نے میرا چہرہ لگا کر کسی اور کا جسم جوڑ دیا اور اسے میرے نام سے منسوب کردیا تاکہ شہرت اور پیسہ کمایا جاسکے۔‘’ انہوں نے کہا کہ ایسے افراد علما کی ویڈیوز ایڈٹ کرکے وائرل کرتے ہیں اور انہیں بدنام کیا جاتا ہے، جس کا فائدہ علما کا مخالف طبقہ اٹھاتا ہے۔‘
مفتی قوی نے وزیراعظم عمران خان سے مطالبہ کیا کہ ’وہ اس کا نوٹس لیں اور سائبر کرائم سے متعلق موثر قانون سازی کی جائے تاکہ من گھڑت اور بے ہودہ ویڈیوز کے ذریعے علما کو بدنام کرنے کا سلسلہ بند ہوسکے۔‘انہوں نے مزید کہا کہ ’ویڈیو چند گھنٹوں میں لاکھوں صارفین تک پہنچ چکی ہیں اور شیئر بھی بہت ہو رہی ہے۔ مجھے بھی ایک دوست نے دکھائی ہے، جسے دیکھ کر بہت دکھ ہوا کہ نئی نسل کس طرف جارہی ہے۔‘ مفتی قوی کی ان ویڈیوز کے بعد سوشل میڈیا پر صارفین کی جانب سے تبصرے کیے جارہے ہیں اور لوگ ان پر کافی تنقید بھی کر رہے ہیں۔ صحافی ضرار کھوڑو نے لکھا: ’مفتی قوی کی ویڈیو دیکھنے کے بعد اب آنکھوں میں تیزاب ڈالنے کا دل کر رہا ہے۔‘
بیا علی زیب نامی ایک صارف نے لکھا: ’مفتی عزیز اور مفتی قوی جیسے لوگ دیگر مفتیوں کا نام بدنام کر رہے ہیں، جو اپنے فرائض بہترین طریقے سے انجام دے رہے ہیں۔‘
ایک اور صارف نے لکھا: ’میں حیران ہوں کہ کیا مفتی قوی شادی شدہ ہیں اور کیا ان کے اہل خانہ ہیں۔‘ تاہم زیادہ تر سوشل میڈیا صارفین مفتی قوی پر تنقید کرتے ہوئے کہہ رہے ہیں کہ ایسی شرمناک ویڈیو پر معافی مانگنے کی بجائے مفتی بڑی ڈھٹائی سے جھوٹ بول رہے ہیں جب کہ ویڈیو میں صاف نظر آ رہا ہے کہ چہرے اور جسم کے علاوہ بھی دیگر نظر آنے والے اعضا مفتی قوی کے اپنے ہی ہیں۔

Related Articles

Back to top button