پاکستانی ڈان بریڈ مین ظہیر عباس کے لیے دعا کی اپیل

پاکستانی ڈان بریڈمین کہلانے والے لیجنڈری کرکٹر اور سابق کپتان ظہیر عباس کو نمونیا ہونے پر لندن میں ایک ہسپتال کے انتہائی نگہداشت یونٹ میں منتقل کر دیا گیا ہے جہاں ان کی صحت اچھی نہیں ہے اور ان کے اہل خانہ نے مداحوں سے دعاؤں کی اپیل کی ہے۔ اپنے ون ڈے ڈیبیو میں مسلسل تین میچوں میں تین سنچریاں بنانے کا ریکارڈ قائم کرنے والے 74 سالہ مشہور بلے باز کو دبئی سے لندن پہنچنے کے بعد نمونیا کی تشخیص ہوئی تھی جس کے بعد ان کی بگڑتی حالت کے پیش نظر انہیں ہسپتال میں داخل کروا دیا گیا ہے۔

ظہیر عباس 16 جون سے لندن میں موجود ہیں اور انہیں انتہائی نگہداشت کے وارڈ میں رکھا گیا ہے۔ بتایا گیا ہے کہ انہیں نہ صرف نمونیا ہو گیا ہے بلکہ ان کا کرونا ٹیسٹ بھی مثبت آیا تھا، ڈاکٹرز نے انہیں دبئی سے سفر کرنے سے منع کیا تھا۔ تاہم طبیعت میں بہتری کے بعد وہ لندن روانہ ہو گئے تھے لیکن وہاں انکی طبیعت مزید خراب ہونے پر ہسپتال داخل کروا دیا گیا۔ یاد رہے کہ حالیہ دنوں یہ افواہیں بھی گرم تھیں کہ ظہیر عباس کو رمیز راجہ کی جگہ پاکستان کرکٹ بورڈ کا نیا چیئرمین لگایا جارہا ہے لیکن حال ہی میں سیٹھی کی میاں صاحب سے اوپر تلے ملاقاتوں کے بعد اب یہ اطلاع ہے کہ اگر رمیز کی چھٹی کروائی گئی تو سیٹھی پی سی بی کے نئے چیئرمین ہوں گے۔

یاد رہے کہ ظہیر عباس نے اپنے انٹرنیشنل کرکٹ کیرئیر کا آغاز 1969 میں نیوزی لینڈ کے خلاف کیا تھا، ظہیر نے 72 ٹیسٹ میچوں میں 5062 رنز اور 62 ایک روزہ بین الاقوامی میچوں میں 2572 رنز بنائے ہیں۔ سابق بلے باز کو اپنے دور کا موسٹ اسٹائلش بلے باز سمجھا جاتا تھا، وہ برصغیر کے واحد بلے باز ہیں جنہوں نے فرسٹ کلاس میچوں میں 100 سے زائد سنچریاں بنائیں، جس پر انہیں ایشین بریڈمین کا لقب ملا تھا۔ ظہیر عباس ایک روزہ میچوں میں جدت اور نئے انداز اپناتے تھے، بیٹنگ میں ان کی اوسط 47 سے زائد اور اسٹرائیک ریٹ تقریباً 85 ہے، جو اس وقت بہترین سمجھی جاتی تھی، اپنے کیرئیر میں 14 ٹیسٹ میچوں میں پاکستان ٹیم کی قیادت کی۔

ظہیر عباس نے 66 -1965 سے 87-1986 کے درمیان 108 فرسٹ کلاس سنچریاں اور 158 نصف سنچریاں بنائیں، وہ انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کے میچ ریفری اور صدر بھی رہے ہیں۔

Related Articles

Back to top button