رمضان ٹرانسمشنز فیملیز کو کس طرح اکٹھا کر رہی ہیں؟


رمضان المبارک کے ماہ مقدس میں سحری اور افطاری دو ایسے اوقات ہوتے ہیں جس کے دوران فیملی ممبرز کھانے کی میز پر اکٹھے ہوتے ہیں، لیکن رمضان ٹراسمشنز بھی اس میں کلیدی کردار ادا کر رہی ہیں، رمضان ٹرانسمشنز کئی سالوں سے ماہ رمضان کا ایک اہم حصہ بن چکی ہیں، سحر و افطار سے قبل ان پروگرامز میں ہونے والے تقریری مقابلے، نعت، کسوٹی، سوالات اور کھانا پکانے کے مقابلے روزہ رکھنے والوں یا روزے داروں کا دل لبھاتے ہیں اور انہیں تفریح فراہم کرتے ہیں۔
پروگرامز میں بڑی تعداد میں تحفے اور تحائف بھی بانٹے جاتے ہیں جنہیں دیکھ کر ناظرین کا دل کرتا ہے کہ وہ بھی ان ٹرانسمشنز کا حصہ بنیں البتہ کافی ساری درخواستوں اور لمبی قطاروں کے باعث کبھی کبھار ہی ان میں حصہ لینے کا موقعہ ملتا ہے۔ یہ رمضان ٹرانسمشنز انتہائی شاندار اور عالیشان طریقے سے سجی ہوئی ہوتی ہیں، اینکرز کے لباس سے لے کر صوفے، کرسیاں، پردے اور لائٹیں، تقریباً ہر چیز کا اپنا ہی جلوہ ہوتا ہے، ان ٹرانسمشنز کے سیٹس کو چار چاند لگانے کے لیے اکثر نایاب نسل کے پرندے، مور، سفید خرگوش، تالاب میں مچھلیاں اور ناجانے کیا کچھ موجود ہوتا ہے تاکہ ٹی وی دیکھنے والے اس سے لطف اندوز ہو سکیں۔
البتہ یہ سب کچھ اس سیٹ کا حصہ ہوتا ہے جس کی تیاری رمضان سے کئی ماہ قبل شروع ہو جاتی ہے، نجی ٹی وی کی رمضان ٹرانسمشن کی میزبان رابعہ انعم نے بتایا کہ میری رمضان ٹرانسمشن کا سیٹ نہیں محلہ ہے، ہم نے یہاں نئے سرے سے ایک محلہ آباد کیا ہے جہاں حسین عمارتیں، ایک ہرا بھرا صحن، ایمپریس مارکیٹ سے متاثر ایکسپریس مارکیٹ، تین کچن، سحر و افطار کے لیے ایک عالیشان میز اور ہمارے محلے کا اپنا ایرانی کیفے موجود ہے جہاں بیٹھ کر ہم اپنے خاص مہمانوں سے گپ شپ کرتے ہیں۔
رابعہ انعم کے مطابق یہ تمام خوبصورت عمارتیں لکڑی کی بنی ہوئی ہیں جو کہ انتہائی مضبوط ہیں، یہ پاکستان کی پہلی رمضان ٹرانسمشن ہے جوکہ پورے 30 تیس دن کھلے آسمان تلے ہو رہی ہے، ایک ایکٹر کے رقبے پر پھیلا یہ سیٹ، میری بڑی بھاگ دوڑ کرواتا ہے، جب میری بس ہوجائے تو میں سینڈلز کی جگہ سنیکرز پہن لیتی ہوں تاکہ آسانی سے بھاگ دوڑ سکوں۔ رابعہ ایکسپریس ٹی وی چینل کی جانب سے ایک خاتون صحافی کو پوری رمضان ٹرانسمشن کی میزبانی کا موقع فراہم کیے جانے پر بھی خاصی خوش ہیں، رابعہ کے مطابق عام طور پر مردوں یا کچھ مخصوص افراد کو ہی ان ٹرانسمشنز کے لیے منتخب کیا جاتا رہا ہے مگر اب یہ رجحان تبدیل ہو رہا ہے۔

Related Articles

Back to top button