وزیراعظم کا ڈیزل قلت کا نوٹس، لوڈ شیڈنگ ختم کرنے کا حکم

وزیراعظم شہباز شریف نے ملک میں ڈٰزل کی قلت کا نوٹس لیتے ہوئے بجلی کی لوڈ شیڈنگ یکم مئی سے ختم کرنے کا حکم دے دیا، کہا کہ موسم گرما کے دوران عوام کو مزید مشکل میں نہیں ڈال سکتے ہیں۔

شہباز شریف نے دیہی علاقوں میں ڈیزل کی مصنوعی قلّت پیدا کرنے والوں کی نشاندہی کر کے ان کے خلاف کارروائی کی بھی ہدایت کی، وزیراعظم شہباز شریف کی زیرِ صدارت ملک میں بجلی کی اعلانیہ اور غیر اعلانیہ لوڈشیدنگ کے حوالے سے اعلی سطح کا ہنگامی اجلاس وزیراعظم ہائوس میں منعقد ہوا۔

وفاقی وزیرِ اطلاعات مریم اورنگزیب، سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی اور متعلقہ اعلی حکام نے اجلاس میں شرکت کی، وزارت توانائی کی جانب سے بریفنگ میں بتایا گیا کہ ’ایک سال سے زائد عرصے سے بند پڑے 27 بجلی گھروں میں سے 20 کو فعال بنا دیا گیا، 20 بجلی گھروں کے دوبارہ چلنے سے بجلی کی پیداوار میں اضافہ ہوا۔

گزشتہ حکومت نے چار سال میں بجلی گھروں کے لیے ایندھن نہیں خریدا۔ موجودہ حکومت نے صرف دو ہفتے میں نہ صرف ایندھن کا انتظام کیا بلکہ ان بجلی گھروں سے بجلی کی پیداوار بڑھا کر لوڈ شیڈنگ کا سدِ باب بھی کیا جا رہا ہے۔

وزیراعظم 28 سے30اپریل تک سعودی عرب کا دورہ کریں گے

اجلاس کو بتایا گیا کہ ملک میں بجلی کی مجموعی پیداوار تقریباً 18500 میگاواٹ ہے، طلب کے لحاظ سے بجلی کا شارٹ فال 500 سے 2000 میگاواٹ ہے۔ لوڈ شیڈنگ کی بڑی وجہ گزشتہ حکومت کا بجلی گھر چلانے کے لیے ایندھن کی بروقت فراہمی کا منصوبہ نہ ہونا ہے، لوڈ شیڈنگ کی دیگر وجوہات میں ایندھن فراہمی میں مسائل، بجلی گھروں کی بروقت مرمت اور دیکھ بھال میں مجرمانہ غفلت ہے۔

Related Articles

Back to top button