وزیر اعظم کیUNجنرل اسمبلی کے افتتاحی اجلاس میں شرکت

وزیراعظم شہباز شریف نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے 77 ویں سیشن کے کے افتتاحی اجلاس میں شرکت کی۔
سیکریٹری جنرل یو این اوانتونیو گوتیرس کی میزبانی میں اقوام متحدہ کے ہیڈکوارٹر میں منعقدہ استقبالیہ تقریب میں دنیا کے مختلف ریاستوں اور حکومتوں کے سربراہان نے شرکت کی۔

وزیراعظم آفس سے جاری بیان کے مطابق شہباز شریف نے استقبالیے کے دوران نیوزی لینڈ کی وزیراعظم جسینڈا آرڈن سے ملاقات کی، وزیراعظم نے فرانس کے صدر ایمانوئیل میکرون سے غیررسمی ملاقات کی اور اس موقع پر وزیرخارجہ بلاول بھٹو زرداری اور وزیرمملکت برائے خارجہ حنا ربانی کھر بھی وزیراعظم کے ہمراہ تھیں۔

وزیراعظم شہباز شریف اس دورے میں آسٹریا کے چانسلر کارل نیہمر، اسپین کے صدر پیڈرو سانچیز پیریزکاسٹیجون اور ایران کے صدرسید ابراہیم رئیسی سے بھی ملاقاتیں کریں گے۔

شہباز شریف امریکی اخبار نیویارک ٹائمز کو انٹرویو دینے کے لیے ٹائمز اسکوائز کا دورہ بھی کریں گے،ان سے امریکی خصوصی ایلچی برائے موسمیاتی تبدیلی جان کیری ملاقات کریں گے۔

بیان کے مطابق کہ 21 ستمبر کو وزیر اعظم شہباز شریف کی بین الاقوامی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) کی ایم ڈی کرسٹالینا جارجیوا، ورلڈ بینک کے صدر ڈیوڈ ملپس اور ترکیہ کے صدر سے بھی ملاقات ہوگی۔

شہباز شریف اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے صدر سے بھی ملاقات کریں گے اس کے علاوہ امریکی صدر جو بائیڈن کی طرف سے شیڈول عشائیے میں شرکت کریں گے جس کے بعد وزیر اعظم شہباز شریف 21 ستمبر کو ترکیہ کے صدر اور ان کی اہلیہ کے اعزاز میں ظہرانہ دیں گے، وزیر اعظم کی فن لینڈ کے صدر سعالی نوسیتو، مائیکرو سافٹ کے بانی بل گیٹس اور اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل انتونیو گوتیرس سے ان کے دفتر میں ملاقات ہوگی۔

کی چین کے وزیر اعظم لی کی کیانگ، جاپان کے وزیر اعظم فیومیو کاشیڈا، لیگزمبرگ کے وزیر اعظم زیوئیر بیٹل سے ملاقاتیں ہوں گی اس کے ساتھ ساتھ ملائیشیا کے وزیر اعظم اسمٰعیل صابری یعقوب سے بھی ملاقات کریں گے۔

وزیر اعظم پاکستان شہباز شریف 23 ستمبر کو اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے خطاب کریں گے۔

شہباز شریف کی نوبل انعام یافتہ پاکستانی سماجی کارکن ملالہ یوسف زئی سے بھی ملاقات ہو گی اور دورے کے موقع پر وزیراعظم ممتاز امریکی اخبار اور ذرائع ابلاغ کو انٹرویوز بھی دیں گے، اس دوران وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری، وزیر مملک برائے خارجہ امور حنا ربانی کھر، وزیر دفاع خواجہ آصف، وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب بھی وزیر اعظم کے ہمراہ ہوں گے۔

اقوام متحدہ کی اس سال کی جنرل اسمبلی اہم ہے کیونکہ یہ 2019 کے بعد اقوام متحدہ میں عالمی رہنماؤں کی پہلی ملاقات ہوگی جیسا کہ 2020 اور 2021 کے سیشن کو کورونا وبا کی وجہ سے ورچوئل میٹنگز میں تبدیل کر دیا گیا تھا۔

Related Articles

Back to top button