اداکارہ اُشنا شاہ کھانا نما کھلونوں پر برہم کیوں ہوگئیں؟

سوشل میڈیا پر فلسطینی بچوں کو کھانا نما کھلونے دیئے جانے کی ویڈیو وائرل ہونے پر اداکارہ اشنا شاہ نے ناگواری کا اظہار کرتے ہوئے اسے ’’احمقانہ مذاق‘‘ قرار دے دیا۔گزشتہ روز فلسطینی صحافی محمد سمری نے سماجی پلیٹ فارم ایکس پر ایک تصویر شئیر کی جس میں دیکھا جا سکتا ہے کہ کھانے کی طرح نظر آنے والے کھلونے شاپر میں پیک کیے گئے ہیں، کھلونوں میں مصنوعی چکن نگٹس، دودھ کا پیکٹ، فرنچ فرائز، برگر اور آئس کریم پیک دیکھے جا سکتے ہیں، فلسطینی صحافی نے کیپشن میں لکھا کہ ہمارے بچوں کو کھانا دینے کے بجائے اقوام متحدہ کھانے کی طرح دکھنے والے کھلونے دے رہا ہے، صحافی کی ٹوئٹ پر اداکارہ اُشنا شاہ نے ری ٹوئٹ کرتے ہوئے لکھا کہ ’کیا کوئی اس کی تصدیق کر سکتا ہے؟ کیا یہ انتہائی فضول مذاق کرنے کا خیال اقوام متحدہ کا ہے؟انہوں نے ناگواری کا اظہار کرتے ہوئے لکھا کہ کیا یہاں کوئی مقابلہ ہو رہا ہے کہ بدترین سلوک کرنے میں کون سی تنظیم سب سے زیادہ نیچے گر سکتی ہے؟ جبکہ دیگر صارفین نے بھی اقوام متحدہ پر غم اور غصے کا اظہار کیا، علیشا نامی صارف نے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے لکھا کہ غزہ کے لوگ پہلے ہی فاقہ کشی کے دہانے پر کھڑے ہیں۔عماد نامی صارف نے لکھا کہ غزہ کی خوف ناک صورت حال کے بارے میں لوگوں کو اندازہ نہیں ہے، غزہ میں اس وقت قحط انسانوں کی پیدا کردہ ہے، یہ نسل کشی کا سامنا کرنے والے لاکھوں لوگوں کا مذاق اڑایا جا رہا ہے۔یاد رہے کہ غزہ کی صورت حال ہر گزرتے دن کے ساتھ بد سے بدتر ہوتی جا رہی ہے جہاں 23 لاکھ سے زائد آبادی کو اسرائیل کی بدترین بمباری کا سامنا ہے، پانی، بجلی اور ادویات ختم ہو رہی ہیں اور غزہ کے اندر کی صورت حال کو اقوام متحدہ نے ’تباہی‘ قرار دیا تھا۔یکم دسمبر کو ایک ہفتہ طویل جنگ بندی کے خاتمے کے بعد مصر سے امدادی ٹرک کی داخلے کی تعداد میں کمی کی وجہ سے بھی صورتحال سنگین ہوگئی، عرب میڈیا کے مطابق بجلی کی بندش اور ضروری سامان کی کمی نے غزہ کی پٹی میں بیکریوں کو بُری طرح متاثر کر دیا ہے۔

Related Articles

Back to top button