اداکارہ حنا بیات کی عدت مکمل کیے بغیر گھر سے نکلنے پر وضاحت

معروف اداکارہ حنا بیات نے شوہر کے انتقال پر عدت پوری کیے بغیر گھر سے نکلنے پر وضاحت دیتے ہوئے کہا ہے کہ اگر وہ ایسا نہ کرتی تو بہت سے لوگوں کو نقصان ہوتا، ’لوگ اسلام کو سمجھتے نہیں صرف فتویٰ لگاتے ہیں۔حنا خواجہ بیات کے شوہر راجر خواجہ بیات جنوری 2023 میں کینسر کے باعث انتقال کر گئے تھے، وہ طویل عرصے سے بیماری میں مبتلا تھے اور اداکارہ انہیں علاج کیلئے بیرون ملک بھی لے گئی تھیں، وہ جب اپنے بیمار شوہر کیلئے خون سمیت دیگر ادویات کا بندوبست کر رہی تھیں، تب ہی انہیں بتایا گیا کہ ان کے شریک حیات اب اس دنیا میں نہیں رہے، انہی دنوں میں ان کے ڈرامے کو آن ایئر کیا گیا، جس پر لوگوں نے انہیں آن لائن تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے یہ تک کہا کہ اداکارہ کو شوہر کے مرنے کا کوئی دُکھ نہیں ہوگا۔ایف ایچ ایف کے پوڈکاسٹ میں شرکت کے دوران اداکارہ نے وضاحت دیتے ہوئے کہا کہ ’ہم سب اپنے آپ کو مسلمان کہتے ہیں لیکن اسلام کو نہیں سمجھتے، ہمیں صرف فتویٰ لگانے آتے ہیں، انہیں سوشل میڈیا پر یہ باتیں سننے کو ملیں کہ ’عدت مکمل کیوں نہیں کی؟ شوہر سے یہی محبت تھی؟ ان عورتوں کو صرف میک اپ لگا کر کیمرا کے سامنے آنے کا شوق ہے۔حنا بیات نے کہا کہ ’عدت کی کچھ شرائط ہیں جس پر عمل کرنا لازمی نہیں ہے، اگر ایک عورت نے اپنا گھر چلانا ہے، وہ زمانہ نہیں رہا کہ چچا مدد کر لیں گے، لوگوں کو یہی مسئلہ تھا کہ میں نے عدت پوری کیوں نہیں کی، کیا میں گھر بیٹھ کر اپنا وقت بھی ضائع کروں اور دوسروں کا بھی نقصان کروں؟ کیا یہ اللہ کو منظور ہوگا؟انہوں نے وضاحت دی کہ جب شوہر کا انتقال ہوا اس وقت میرا ایک پروجیکٹ ٹی وی نشر ہورہا تھا، اس کے چند سین اگلے ہفتے آن ائیر ہونے تھے تو کیا میں کام پر نہ جاتی؟ اگر میں اس وقت عدت میں بیٹھ جاتی تو کتنے سارے لوگوں کا نقصان ہوتا، وہ لوگ ٹی وی پر کیا نشر کرتے؟ میں اپنے گھر کے مسائل کے بارے میں پوری دنیا کو وضاحت نہیں دے سکتی۔اداکارہ شوہر کے انتقال پر خود پر ہونے والی تنقید پر اشکبار ہوتے ہوئے کہا کہ لوگوں کو اس بات کا اندازہ اور علم ہی نہیں ہوتا کہ دوسرا کس مشکل وقت سے گزر رہا ہے اور اس کی ذہنی اور دماغی کیفیت کیا ہے، لوگوں کو سمجھنا چاہئے کہ انسان کو زندگی آگے بڑھانی ہوتی ہے، اسے آگے چلنا ہوتا ہے، عدت کے شرعی تقاضے پورے کر کے معمول کی زندگی کی جانب لوٹنا پڑتا ہے اور عدت کے حوالے سے بھی شرائط اور لوازمات موجود ہیں۔

Related Articles

Back to top button