’’بشریٰ انصاری کی نواز شریف پر رشوت الزامات کی وضاحت‘‘

معروف میزبان، اداکارہ بشریٰ انصاری نے سابق وزیراعظم نواز شریف کی جانب سے رشوت دینے کے الزام کی وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ ان کے والد کو نواز شریف نے نہیں بلکہ ان کی جماعت کے کسی رہنما نے رشوت کی آفر کی تھی۔آرٹس کونسل کراچی میں 16ویں عالمی اُردو کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے بشریٰ انصاری نے اپنے والد احمد بشیر کے بارے میں ماضی کا ایک واقعہ شیئر کیا، اداکارہ نے نواز شریف اور ان کی سیاسی جماعت مسلم لیگ (ن) کا نام لیے بغیر کہا کہ والد جب اپنے کمرے میں ہوتے تو کئی مہمان اور صحافی ان سے ملاقات کیلئے آتے تھے، ایک مرتبہ کمرے سے والد کی غصے سے لوگوں کو ڈانٹنے کی آوازیں سنائی دے رہی تھیں تو ہم ڈرگئے تھے۔بشریٰ انصاری نے کہا کہ جب انہوں نے اپنے والد سے غصہ کرنے کی وجہ پوچھی تو انہوں نے بتایا کہ ایک شخص انہیں رشوت دے رہے تھے، میں ان کا نام نہیں لے سکتی وہ (نواز شریف) ابھی ابھی ملک میں واپس آئے ہیں، بُری بات ہے، ان کی طبیعت بھی ٹھیک نہیں رہتی، جس پر شرکا اور اسٹیج پر بشریٰ انصاری کے ساتھ موجود اداکار یاسر حسین بھی ہنسنے لگے اور تالیوں سے ہال گونج اٹھا۔اداکارہ نے اپنی بات جاری رکھتے ہوئے نواز شریف کا نام لیے بغیر کہا کہ ان (نواز شریف) کی طرف ایک شخص آیا تھا اور والد کو لفافہ دینے کی کوشش کی لیکن انہوں نے لینے سے منع کر دیا، جس پر والد غصہ ہوئے تھے، ہمیں اپنے والد پر فخر ہے، اگر آج کے زمانے میں میرے والد زندہ ہوتے تو روز مرتے، اچھا ہوا وہ 25 سال قبل اس دنیا سے رخصت ہوگئے۔اب بشریٰ انصاری نے ایک اور ویڈیو جاری کرتے ہوئے اپنے بیان کی وضاحت دی ہے، اداکارہ نے کہا کہ آرٹس کونسل میں دیے گئے بیان کی وجہ سے سوشل میڈیا پر سیاسی جماعتیں انہیں تنقید کا نشانہ بنا رہی ہیں اور ان کے نام کو مخصوص سیاسی جماعت کے ساتھ منسلک کیا جا رہا ہے۔انسٹاگرام پر وضاحتی ویڈیو بیان جاری کرتے ہوئے اداکارہ نے کہا کہ ’آرٹس کونسل میں اپنے والد احمد بشیر کا سچا واقعہ بیان کیا، مسلم لیگ (ن) کے رہنماؤں نے میری گفتگو کا غلط مطلب لیا جو سوشل میڈیا پر بھی زیر بحث ہے، اس آدمی کو نواز شریف نے خود نہیں بھیجا تھا کیونکہ یہ چیز مجھے معلوم ہے کہ ہر پارٹی میں کئی لوگ ایسے ہوتے ہیں جو یہ عمل خود سے کرتے ہیں۔بشریٰ انصاری نے کہا کہ میں نے یہ نہیں کہا کہ نواز شریف نے رشوت دینے والے شخص کو بھیجا تھا یا انہوں نے خود لفافہ بھجوایا تھا، آصف زرداری، پرویز مشرف، نواز شریف ، عمران خان ہمارے لیڈرز ہیں، ہم ان کی عزت کرتے ہیں لیکن میں اپنی رائے اپنے پاس رکھتی ہوں اور الیکشن کے وقت اپنی رائے کا استعمال کرتی ہوں، برائے مہربانی میری بات کا بتنگڑ مت بنائیں۔

Related Articles

Back to top button