رجنی کانت بس کنڈیکٹر سے بالی ووڈ سپر سٹار کیسے بنے؟

انڈین سائوتھ فلموں کے سپر سٹار رجنی کانت نے کیرئیر کا آغاز بطور بس کنڈیکٹر کیا، اور شوبز فیلڈ میں نام بنانے تک بے حد مشقت اور محنت کی جس کی وجہ سے وہ کامیاب ہوئے۔بھارتی میڈیا کے مطابق رجنی کانت 12 دسمبر 1950 کو بنگلور میں پیدا ہوئے تھے اور ان کا اصل نام شیواجی راؤ گائیکواڈ ہے، وہ بچپن سے ہی فلم اداکار بننا چاہتے تھے، ابتدائی دور میں رجنی کانت نے بس کنڈیکٹر کا کام شروع کیا۔ اس دوران انہوں نے سٹیج ڈراموں میں بھی کام کیا۔تامل فلموں کے مشہور ڈائریکٹر کے بال چندر نے ایک ڈرامہ میں رجنی کانت کی کارکردگی دیکھی جس سے وہ بہت متاثر ہوئے۔ 1975میں کے بال چندر کی ہدایت میں بنی تمل فلم اپوروا رنگاگل سے رجی کانت نے اپنی فلمی کیریر کی شروعات کی، اس فلم میں کمل ہاسن نے اہم کردار ادا کیا تھا۔1978 میں آئی فلم بھیروی میں رجنی کانت کو کلیدی رول ادا کرنے کا پہلا موقع ملا۔ یہ فلم باکس آفس پر سپر ہٹ ثابت ہوئی، اس فلم کے ساتھ ہی رجنی کانت بھی سپر سٹار بن گئے، اس کے بعد 1980 میں رجنی کانت کی ایک اور سپر ہٹ فلم ’بلا‘ ریلیز ہوئی، بلا امیتابھ کی سپر فلم ڈان کی ریمیک تھی۔1983 میں ریلیز فلم اندھا قانون کے ذریعے رجنی کانت نے بالی ووڈ میں بھی قدم رکھا، اس فلم میں رجنی کانت کی اداکاری نہایت شاندار تھی، ناظرین نے رجنی کانت کا یہ اندازج بہت پسند کیا، اندھا قانون سپر ہٹ فلم رہی، اسی دوران رجنی کانت نے’ جان جانی جناردھن‘ میں ٹرپل رول کیا حالانکہ یہ فلم باکس آفس پرکوئی خاص اثر نہیں دکھا سکی۔1990 کی دہائی میں رجنی کانت ساوتھ فلموں کے سپر اسٹار بن گئے۔ رجنی کانت نے جتنی بھی فلموں میں کام کیا سبھی باکس آفس پر تقریباً ہٹ رہیں، 2007 میں رجنی کانت کی فلم شیواجی دی باس ریلیز ہوئی۔ اس فلم نے باکس آفس پر کامیابی کے نئے جھنڈے گاڑے۔2010 میں رجنی کانت کی فلم روبوٹ ریلیز ہوئی، اس فلم میں رجنی کانت کے ساتھ ایشوریہ رائے تھیں، روبوٹ نے 255 کروڑ روپے سے زیادہ کی کمائی کرکے نئی تاریخ رقم کی۔ روبوٹ رجنی کانت کی تمل فلم انتھرن کا ہندی ورژن تھا۔ 2014 میں رجنی کانت کی دو فلمیں کوچادائیاں اور لنگا ریلیز ہوئی، حالانکہ دونوں فلمیں ٹکٹ کاؤنٹر پر کوئی خاص کمال نہیں دکھا سکی۔

Related Articles

Back to top button