صائمہ نے سید نورسے شادی محبت کے لیے نہیں، کیرئیر کے لیے کی


معروف ہدایتکارسید نوراداکارہ صائمہ سے محبت کے جتنے بھی دعوے کرلیں مگرسچ یہی ہے کہ صائمہ نے ان سے شادی محبت میں اندھے ہو کر نہیں، بلکہ اپنا فلمی کیریئر بچانے کے لئے کی تھی اور وہ اپنے اس مشن میں کافی حد تک کامیاب بھی رہیں۔ کہنے والے تو یہ بھی کہتے ہیں کہ سید نور صائمہ سے شادی نہ بھی کرتے تو بھی وہ اپنی پہلی اہلیہ اور سات بچوں کی ماں رخسانہ نور کے وفادار نہیں تھے۔ناقدین کہتے ہیں کہ سٹیج، ٹی وی اور فلم کی کن کن اداکاراؤں کے ساتھ سید نور کے تعلقات رہے ہیں، کون نہیں جانتا؟ فلمی حلقے تو لیجنڈری اداکارہ بابرہ شریف کے ساتھ بھی ان کے تعلق کا دعویٰ کرتے ہیں، کہا جاتا ہے کہ اگر بابرہ شریف حامی بھر لیتیں تو سید نور ان سے بھی شادی کر لیتے۔

بھنورے کی فطرت رکھنے والے سید نور کی زندگی میں رخسانہ نور پہلی لڑکی تھیں جو غیر فلمی بیک گراؤنڈ سے تعلق رکھتی تھیں، ان کا تعلق درس و تدریس کے شعبے سے منسلک شرفا کے ایک سفید پوش خاندان سے تھا۔ رخسانہ بلند پائے کی لکھاری بھی تھیں اور سید نور جانتے تھے کہ ان کے کیریئر میں وہ کتنی مددگار ثابت ہو سکتی ہیں۔ جس بلاک بسٹر فلم چوڑیاں کی شوٹنگ کے دوران سید نور اداکارہ صائمہ سے اپنے عشق اور شادی کی کہانی سناتے ہیں، اس فلم کی کہانی اور سدا بہار گانوں کو لکھنے والی بھی رخسانہ ہی تھیں۔ سید نور کا یہ دعوی ٰبالکل غلط ہے کہ رخسانہ کو صائمہ سے ان کے تعلقات کا علم نہیں تھا، وہ سب جانتی تھیں بلکہ یوں کہنا چاہیئے کہ شوہر کی رگ رگ سے واقف تھیں لیکن ایک وفا شعار بیوی اور انکے چار خوبصورت بچوں کی خاطر انھوں نے گھر کو بکھرنے نہیں دیا۔

سید نور کا یہ دعویٰ بھی غلط ہے کہ ان کی پہلی بیوی نے ان کی شادی کو تسلیم کر لیا تھا۔ سچ تو یہ ہے کہ انھوں نے اس شادی کو اپنی موت تک تسلیم نہیں کیا تھا، البتہ انھوں نے شوہر کی اس بیوفائی سے سمجھوتہ کر لیا تھا، دراصل وہ چاہتی تھیں کہ ان کے بچے باپ سے ہمیشہ جڑے رہیں۔ تاہم صائمہ کے سائے سے بھی وہ انھیں دور رکھنا چاہتی تھیں۔ یہی وجہ تھی کہ رخسانہ کی زندگی میں، صائمہ ان کے بچوں سے کبھی نہیں مل سکیں۔ البتہ باپ کی محبت میں اب سبھی بچے ان سے ملتے ہیں۔ انھوں نے باپ کی خاطر صائمہ کو تسلیم کر لیا ہے اور سید نور کا اکلوتا بیٹا شاہ ظل اب اپنی ماں کی سوکن کو اماں بھی کہنے لگا ہے لیکن رخسانہ نور کی تینوں بیٹیوں نے صائمہ کو ماں کا درجہ نہیں دیا۔ صائمہ ان کے لئے آج بھی آنٹی ہی ہیں۔ رخسانی کے بچے جانتے ہیں کہ ان کی ماں نے کس اذیت میں زندگی گزاری اور پھر کینسر کے ہاتھوں اپنی جان گنوائی؟ وہ اکثر کہتی تھیں کہ سید نور بھلے دوسری شادی کر لیتے لیکن فلموں میں کام کرنے والی اس عورت سے نہیں۔انھیں اس بات کا بھی دکھ تھا کہ ان کے شوہر نے اپنے بچوں کا حق اس عورت کی جھولی میں ڈال دیا۔ یہ بات بھی بہت کم لوگ جانتے ہیں کہ سید نور نے اپنی جائیداد کا ایک بڑا حصہ صائمہ کے نام کر رکھا ہے اور ان کی دوسری بیوی بننے کی ایک بڑی وجہ یہ بھی تھی۔

Related Articles

Back to top button