فردوس جمال نے ماہرہ کو لڑکی کی بجائے عورت قرار دے دیا


معروف ٹی وی اداکارفردوس جمال نے ایک مرتبہ پھرماہرہ خان بارے کہا ہے کہ وہ لڑکی نہیں بلکہ عورت ہیں لہذا انہیں ہیروئن کے کردارادا کرنے کے بجائے اپنی عمر کے مطابق کردارادا کرنے چاہئیں تاکہ وہ سکرین پرزیادہ جچ پائیں۔

ماضی میں اداکارہ ماہرہ خان کو والدہ کے کردار کیلئے موزوں قرار دینے والے سینئراداکار فردوس جمال نے اپنی پرانی گفتگو کی وضاحت دیتے ہوئے کہا کہ میں نے یہ کبھی نہیں کہا کہ ماہرہ ’’بوڑھی‘‘ ہو چکی ہیں۔ میں نے یہ کہا تھا کہ وہ اب لڑکی نہیں رہیں بلکہ عورت ہیں لہذا بطور ہیروئن اچھی نہیں لگتی ہیں۔ فردوس جمال نے پہلی بار جولائی 2019 میں ایک پروگرام میں کہا تھا کہ ماہرہ نہ تو اچھی اداکارہ ہیں اور نہ ہی وہ اچھی ہیروئن بن سکتی ہیں، اس لیے انہیں اب فلموں میں والدہ کا کردار ادا کرنا چاہئے۔

سینئر اداکار نے ماہرہ خان کے بارے میں بات کرتے ہوئے کہا تھا کہ ان کی عمر اب زیادہ ہو گئی ہے، اور وہ لڑکی کی بجائے عورت لگتی ہیں، اس لیے اب انہیں فلموں میں ہیروئن کے بجائے ماں کا کردار ادا کرنا چاہئے، بعد ازاں ماہرہ خان نے بھی فردوس جمال کی تنقید کا جواب دیا تھا اور ان کے الفاظ کو نا مناسب قرار دیا تھا۔ اب فردوس جمال نے احمد بٹ کے ٹی وی شو میں ماہرہ خان پر کی جانے والی تنقید بارے وضاحت کرتے ہوئے کہا ہے کہ میں نے کبھی بھی اداکارہ کو ’بوڑھا‘ نہیں کہا، فردوس جمال کے مطابق میں نے ماہرہ کو مشورہ دیا تھا کہ انہیں کیریکٹرز پر مبنی کردار ادا کرنے چاہئیں۔ انہوں نے کہا کہ چونکہ ہیروئن کم عمر لڑکیاں ہوتی ہیں اور ماہرہ اب عورت بن چکی ہیں، اس لیے انہیں ہیروئن کے طور پر نہیں بلکہ ایک عورت کے کردار ادا کرنے چاہئیں، فردوس جمال نے کہا کہ اب اگر میں ہیرو کے طور پر کام کروں تو اچھا نہیں لگوں گا، اسی طرح ماہرہ خان بھی اب ہیروئن کے طور پر اچھی نہیں لگیں گی۔

Related Articles

Back to top button