نیوزاینکررابعہ انعم تعریف کے بعد تنقید کی زد میں کیوں؟


معروف نیوز اینکر رابعہ انعم کی جانب سے ایک ٹی وی شو کے دوران محسن عباس حیدر کے خلاف واک آؤٹ کرنے پر جہاں خواتین ان کی تعریفیں کر رہی ہیں وہیں شوبز سے وابستہ کئی خواتین ان پر تنقید بھی کر رہی ہیں۔ رابعہ انعم نے ندا یاسر کے مارننگ شو سے اس لیے واک آؤٹ کیا تھا کہ وہاں اداکارہ فاطمہ سہیل پر تشدد کرنے والے انکے سابقہ شوہر محسن عباس حیدر بھی بطور مہمان مدعو تھے۔ رابعہ انعم نے پروگرام چھوڑ کر جانے سے قبل ندا یاسر، اے آر وائے چینل اور پروگرام کے پروڈیوسرز سے معافی بھی مانگی اور کہا کہ انہیں معلوم نہیں تھا کہ پروگرام کے دوسرے مہمان کون ہیں۔ رابعہ انعم نے ندا کو بتایا کہ انہوں نے گھریلو تشدد کے خلاف کھڑے ہونے کا عزم کر رکھا ہے اور وہ اس حوالے سے آواز بھی بلند کرتی آ رہی ہیں، جس وجہ سے آج ان کا پروگرام میں بیٹھنا انہیں مناسب نہیں لگ رہا۔انہوں نے کہا کہ اگر وہ شو میں شریک رہیں تو ان کی تمام کاوشیں ختم ہوجائیں گی، اس لیے وہ مزید اس پروگرام کا حصہ نہیں رہنا چاہتیں، کیوں کہ وہ گھریلو تشدد کے خلاف اٹھائی گئی اپنی آواز کو کم نہیں دیکھنا چاہتیں۔

اس کے بعد وہ پروگرام چھوڑ کر چلی گئیں۔ اس دوران ندا یاسر نے وقفہ لیا اور بعد ازاں پروگرام کو محسن عباس حیدر اور فضا علی کے ساتھ مکمل کیا گیا جب کہ یوٹیوب پر رابعہ انعم کے پروگرام چھوڑ جانے کی کلپ کو بھی نکال دیا گیا۔ رابعہ انعم کی جانب سے پروگرام چھوڑ جانے کے عمل پر متعدد افراد اور شوبز شخصیات نے ان کی تعریفیں کیں اور ان کے قدم کو سراہا۔ تاہم بعض سوبز شخصیات اور سوشل میڈیا صارفین ان کے اس عمل سے ناخوش دکھائی دیے اور ان پر دوسرے لوگوں کی تضحیک کرنے کا الزام لگایا۔

ماڈل اور میزبان متھیرا نے رابعہ انعم کے عمل پر سخت ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے لکھا کہ انہیں دوسروں کو سرعام تضحیک نشانہ بنانے کا کوئی حق حاصل نہیں۔متھیرا نے رابعہ انعم کی شو چھوڑنے کی ویڈیو پر کمنٹس کرتے ہوئے لکھا کہ گھریلو تشدد کے خلاف کھڑا ہونا اچھی بات ہے لیکن وہ اچھے طریقے سے بھی شو کو چھوڑ سکتی تھیں۔ ماڈل نے لکھا کہ ان کے ساتھ بھی متعدد شوز میں مسائل ہوئے لیکن انہوں نے کسی دوسرے کی تضحیک کیے بغیر شو کو احترام سے چھوڑا۔ متھیرا نے یہ بھی لکھا کہ غلطیاں کرنے والے لوگوں کو خود کو تبدیل کرنے کا موقع دیا جانا چاہیے اور کسی کی براہ راست تضحیک کرکے ہیرو بننے کی کوشش سے گریز کیا جانا چاہیے۔

ان کی طرح سینئر اداکارہ مشی خان نے بھی رابعہ انعم کے عمل کو نامناسب قرار دیتے ہوئے لکھا کہ وہ میک اپ روم میں مہمانوں سے متعلق جان کر شو میں شرکت کرنے سے انکار کر سکتی تھیں۔ اداکارہ نے لکھا کہ ممکن ہے کہ ان کے منیجر کو ہر بات کا علم ہو اور انہوں نے اسے اسٹنٹ کے طور پر لیا ہو تاکہ زیادہ توجہ حاصل کی جا سکے۔ ان کی طرح ٹی وی میزبان ڈاکٹر بشریٰ اقبال نے بھی رابعہ انعم کے شو چھوڑ جانے کی تصویر شیئر کرتے ہوئے لکھا کہ ان اداکاراؤں اور خواتین میزبان کا بھی احتساب ہونا چاہیے اور ان پر پابندی لگائی جانی چاہیے، جنہوں نے دوسروں کی زندگی خراب کی۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ دوسروں کے گھر تباہ کرنے والے تمام افراد پر پابندی لگائی جانی چاہیے۔

Related Articles

Back to top button