پاوری گرل کو یونیورسٹی میں دیکھ کر طلبا غصے میں کیوں؟

سوشل میڈیا سے مقبولیت حاصل کرنے والی دنا نیر عرف ’’پاوری گرل‘‘ کو کراچی میں بھٹو کے نام سے منسوب ایک یونیورسٹی میں مدعو کرنے پر ہنگامہ کھڑا ہوگیا اور طلبا کی بڑی تعداد نے اظہار برہمی کرتے ہوئے انہیں ایک نام پسندیدہ شخصیت قرار دے دیا۔ یاد رہے کہ کراچی میں ’شہید ذوالفقار علی بھٹو انسٹی ٹیوٹ آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی‘ یا زیبسٹ کی جانب سے منعقد کروائے جانے والے میڈیا فیسٹیول میں ’پاوری گرل‘ دنانیر مبین کو مدعو کیا گیا تھا، لیکن انکی آمد پر طلبا سمیت شرکا کی بڑی تعداد نے غصے کا اظہار کیا۔

یاد رہے کہ دنانیر مبین تب اچانک دنیا بھر میں مشہور ہوئی تھیں جبکہ 6 فروری 2021 کو ان کی ایک مختصر انسٹا گرام ویڈیو وائرل ہو گئی تھی، دنانیر نے 6 فروری کو اپنی بہن اور سہیلیوں کے ہمراہ شمالی علاقہ جات میں سیر سیاحت کے دوران محض 5 سیکنڈ کی ایک ویڈیو سوشل میڈیا پر شیئر کی تھی جو کافی وائرل ہوئی تھی۔ مختصر ویڈیو میں دنانیر انگریزی انداز میں اردو بولتے ہوئے دکھائی دی تھیں، ویڈیو میں دنانیر کو ’یہ ہماری کار ہے، یہ ہم ہیں اور یہاں ہماری ’پاوری‘ ہو رہی ہے کہتے ہوئے سنا جا سکتا تھا۔

ویڈیو وائرل ہونے کے بعد راتوں رات اسٹار بن جانے والی دنانیر مبین نے اگرچہ بعد ازاں ماڈلنگ اور اداکاری میں بھی انٹری کی اور اسی وجہ سے زیبسٹ نے اپنے میڈیا فیسٹیول میں بھی انہیں مدعو کیا مگر لوگوں کو ان کی وہاں موجودگی اچھی نہیں لگی۔

بتایا گیا ہے کہ زیبسٹ انتظامیہ نے دنانیر کو ’زیبسٹ میڈیا فیسٹیول‘ میں ’دی انسٹنٹ ریوولیوشن‘ نامی پروگرام میں گفتگو کے لیے مدعو کیا تھا، انتظامیہ نے ان کے ہمراہ متعدد شوبز شخصیات، اداکاراؤں، ماڈلز اور سوشل میڈیا سٹارز کو بھی بلایا تھا مگر شائقین نے دیگر کے بجائے دنانیر مبین کی شرکت پر اعتراض کیا۔
سوشل میڈیا پر لوگوں نے جہاں زیبسٹ انتظامیہ پر تنقید کی، وہیں دنانیر مبین کی تعلیمی ادارے کے پروگرام میں شرکت پر ادارے کی تعلیمی ساکھ پر بھی سوال اٹھایا اور ساتھ ہی لوگوں نے ’پاوری گرل‘ پر ہلکے پھلکے انداز میں تنقید بھی کی۔

ایک صارف نے دنانیر مبین کو یونیورسٹی کی جانب سے مدعو کیے جانے پر سخت رد عمل دیا اور کہا کہ انہیں موٹیویشنل سپیکر کے طور پر بلانے سے نہ صرف ہمارے تعلیمی اداروں کی تنزلی کا پتا چلتا ہے بلکہ اس سے سماجی تنزلی بھی کھل کر سامنے آگئی۔

عمران خان کے سوشل میڈیا مینجرز ارب پتی کیسے بنے؟

ایک سوشل میڈیا صارف نے دنانیر مبین کے پروگرام کا بینر شیئر کرتے ہوئے مزاحیہ انداز میں تنقید کی کہ اب وہ لوگوں کو سکھائیں گی کہ 10 سیکنڈز کی ویڈیو بنانا کتنا مشکل ہوتا ہے۔ ایک اور صارف نے انہیں مدعو کیے جانے پر تنقید کرتے ہوئے لکھا کہ انہیں دنانیر مبین سے نفرت یا کوئی مسئلہ نہیں لیکن ہمیں سوچنا چاہئے کہ ایسے ملک میں جہاں شاعر اور فنکار اپنی شناخت بنانے کے لیے خودکشیاں کر رہے ہیں، وہاں ایسے لوگوں کو اتنی اہمیت دینا ٹھیک ہے؟ ایک اور صارف نے دنانیر کی تقریر سنے بغیر ان پر تنقید کرتے ہوئے لکھا کہ انہیں نہیں معلوم کہ وہ کیسی متاثر کن تقریر کر سکیں گی، ساتھ ہی لکھا کہ انہیں مدعو کرنا سوالیہ نشان ہے۔۔

ایک صارف نے دنانیر مبین پر تنقید کرنیوالے لوگوں کو یاد دلایا کہ انہیں یاد رکھنا چاہئے کہ زیبسٹ ایک بزنس سکول ہے جو دیگر اداکاروں کو بھی مدعو کرتا ہے اور یہ کہ اب دنانیر کامیاب اداکارہ بن چکی ہیں اور وہ ویڈیوز اور ڈراموں میں نظر آتی ہیں، انہیں مدعو کیے جانے میں کیا خرابی ہے؟ ان کی طرح پوڈکاسٹ شو کے دوران شہزاد غیاث شیخ نے بھی دنانیر کی حمایت کی اور ان پر تنقید کرنے والے لوگوں کے لیے لکھا کہ یہ فیصلہ کرنے والے ہم لوگ کون ہوتے ہیں کہ کون فنکار ہے یا نہیں؟ سوشل میڈیا صارف نے واضح کیا کہ وہ دنانیر مبین کی بات نہیں کر رہے بلکہ وہ اس کانٹینٹ کریئٹر کی بات کر رہے ہیں جو سوشل میڈیا پر ویڈیوز بناتے ہیں، جب ہم لوگ فیصلہ کر لیتے ہیں کہ فلاں شخص فنکار نہیں تو پھر انہیں ان کی ٹک ٹاک ویڈیوز بنانے پر بھی گالیاں دینے لگتے ہیں۔

ایک اور سوشل میڈیا صارف نے ٹوئٹ کی کہ ہم لوگ ٹرولنگ کو عام کرتے جا رہے ہیں اور ساتھ ہی لکھا کہ اگر کوئی نو عمر لڑکی خود کو فنکار سمجھ کر ٹک ٹاک ویڈیوز بناتی ہے تو اس میں ہمارا کیا نقصان ہے؟ ہم کیوں انہیں غلط سمجھتے ہیں۔

Related Articles

Back to top button