دورہ آسٹریلیا میں سرفراز کی کمی محسوس ہوگی:بابراعظم

پاکستان ٹی ٹوئنٹی ٹیم کے کپتان بابر اعظم کا کہنا ہے کہ وہ ویرات کوہلی اور کین ولیمسن کو دیکھ رہا ہوں کہ وہ اپنی پرفارمنس کے ساتھ ٹیموں کے کیسے آگے لے کر چل رہے ہیں ۔
آسٹریلیا روانگی سے قبل کپتان بابر اعظم نے نیوز کانفرنس میں کہا کہ پریس کانفرنس کیلئے آتے ہوئے پرانی یادیں تازہ ہو گئیں، یہاں بال پِکر کے طور پر آیا تھا اور آج یہاں کپتان کی حیثیت بیٹھا ہوں ، اس مقام تک پہنچنے کیلئے سخت محنت کی ، یہ آسان سفر نہیں رہا ۔
بابراعظم نے کہا کہ وہ انڈر 19 کرکٹ ٹیم کی بھی کپتانی کر چکے ہیں اب ذمہ داری ملی ہے تو اس کا دباؤ نہیں ہے کوشش ہو گی کہ اپنی پرفارمنس کے ساتھ ٹیم کی بھی پرفارمنس بھی اچھی ہو،آسٹریلیا میں سیریز ہمیشہ چیلنجنگ ہوتی ہے ، اچھا کھیلنے اور جیت کا جذبہ لے کر آسٹریلیا جا رہے ہیں۔
بابر اعظم نے کہا کہ ٹیم کا کمبی نیشن اچھا ہے ، سینیئر کے ساتھ جونیئر کھلاڑی بھی شامل ہیں ، محمد عامر کےساتھ اب محمد عرفان بھی ٹیم میں ہیں لہٰذا بولنگ کا کمبی نیشن اچھا ہے ۔شعیب ملک اور محمد حفیظ جیسے سینیئر کھلاڑیوں اور سلیکشن میں اِن پٹ کے حوالے سے پوچھے جانے والے سوال پر بابر اعظم نے کہا کہ سلیکشن میں ان کی رائے لی جاتی ہے ، سینیئر کھلاڑیوں کے حوالے سے بات کی تھی لیکن ٹیم منتخب کرنے میں آخری فیصلہ سلیکشن کمیٹی کا ہے ۔
بابر اعظم نے کہا کہ تین میچوں کی پرفارمنس سے اندازہ نہیں لگانا چاہئے کہ میری پرفارمنس نیچے جارہی ہے ، اونچ نیچ ہوتی رہتی ہے ، ہماری ٹیم میں بوجھ بننے والا کوئی کھلاڑی نہیں ، فخر زمان اور شاداب خان کی کارکردگی بہتری کی طرف جارہی ہے ۔
انہوں نے بتایا کہ وہ فخر زمان کے ساتھ اوپننگ کریں گے جبکہ امام الحق بیک اپ اوپنر ہیں ۔بابر اعظم نے کہا کہ سرفراز احمد کی کمی محسوس ہوُگی ، ان کی بڑی خدمات ہیں ، ان کے دور میں ٹیم نمبر ون بنی لیکن محمد رضوان اچھا کھیلتے ہوئے ٹیم میں آئے ہیں ان کی موجودگی سے بھی فائدہ ہوگا۔پاکستان ٹی ٹوئنٹی اسکواڈ تین ٹوئنٹی میچوں کی سیریز کیلئے ہفتے کی صبح لاہور سے براستہ دبئی سڈنی کیلئے روانہ ہو رہا ہے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button