ٹوئٹر کے نئے مالک نے ہزاروں بھارتی ملازمین فارغ کردیے

ٹیسلا کار کمپنی کے مالک ایلون مسک نے معروف سوشل میڈیا پلیٹ فام ٹوئٹر کو خریدنے کے بعد وسیع پیمانے پر ڈاؤن سائزنگ شروع کرتے ہوئے ہزاروں ملازمین کو نوکریوں سے برخاست کر دیا ہے جن میں زیادہ تر تعداد بھارتی نژاد شہریوں کی ہے۔

خود کو چیف ٹوئیٹ قرار دینے والے ایلون مسک نے ٹوئیٹر کا کنٹرول سنبھال لیا ہے جسکے بعد ملازمین کو فارغ کرنا شروع کر دیا گیا ہے۔ ایلون مسک نے چیف ٹوئیٹ کا عہدہ سنبھالنے کے بعد پہلی فرصت میں تین بڑے ٹوئیٹر افسران کی چھٹی کرائی تھی جن میں بھارتی سی ای او بھی شامل تھے، ٹوئٹر کی نئی انتظامیہ نے ہزاروں ملازمین کو بذریعہ ای میل آگاہ کیا ہے کہ انہیں نکال دیا گیا ہے۔ یاد رہے کہ ایلون مسک حال ہی میں ٹوئٹر کے مالک بنے ہیں جس کے لیے انہوں نے 44 ارب ڈالر کی بولی لگائی تھی۔ ٹوئیٹر کی جانب سے یہ بھی بتایا گیا ہے کہ جن ملازمین کو برقرار رکھا جا رہا ہے ان کو دفتری ای میل ایڈریس پر آگاہ کر دیا جائے گا جن ملازمین کو فارغ کر دیا گیا ہے، ان کو ذاتی ای میل ایڈریسز پر مطلع کیا جائے گا۔

نئے مالک ایلون مسک نے پچھلے ہفتے ملازمین کی فراغت کا اشارہ دیتے ہوئے بتایا تھا کہ اس کی وجہ اخراجات میں کمی ہے جبکہ پلیٹ فارم کے لیے نئے ضوابط کا اعلان بھی کیا تھا۔ انہوں نے فوری طور پر کئی اعلٰی عہدیداروں کو برطرف کر دیا تھا جن میں چیف ایگریکٹیو کے علاوہ فنانس، اشتہارات، مارکیٹنگ اور قانونی معاملات دیکھنے والے اہم عہدیدار بھی شامل تھے، ٹوئٹر ملازمین کو ای میل بھجوائے جانے کے تھوڑی دیر بعد سینکڑوں کی تعداد میں لوگوں نے ’گڈ بائے‘ کے پیغامات جاری کیے۔ ٹوئیٹر انتظامیہ کی جانب سے ملازمین کو کی جانے والی ای میل میں بتایا گیا تھا کہ ’اگر آپ دفتر میں ہیں یا پھر دفتر جا رہے ہیں، براہ مہربانی گھر پلٹ جائیں، رپورٹ کے مطابق ایلون مسک نے ٹوئٹر انتظامیہ کو انفراسٹرکچر کی مد میں سالانہ ایک ارب ڈالر کی بچت کرنے کی ہدایت بھی کی ہے۔

Related Articles

Back to top button